Rahe Huda – Tv Anchors K Ahmadiyyat Par Aiterazat K Jawab – Ahmadis aor Israil




Rahe Huda – Tv Anchors K Ahmadiyyat Par Aiterazat K Jawab – Ahmadis aor Israil

Rah-e-Huda – 16 May 2020 – Frankfurt Germany

اس سے ایس جا ہاؤس بسم اللہ الرحمن الرحیم ناظرین کرام اسلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ میں صبح شام چار بجے ہیں اور عمرہ کے ساتھ آپ کی خدمت میں ایک دفعہ پھر حاضر ہو رہے ہیں نظام جیسا کہ آپ پہلے بھی دیکھتے آرہے ہیں ہمارا یہ پروگرام لائف ہے انٹریکٹ ہے ایک پروگرام کے دوران میں ناظرین آسامیاں ایک میں ہوں کہ وہ ہم سے رابطہ کر سکتے ہیں اس کا سکین اس کا جواب وہ ہمارے علماء کے ذریعے یہاں پر بھی حاصل کر سکے گی موجودہ حالات کے پیش نظر ہمارا آج کا پروگرام بھی اس کا دورانیہ ایک گھنٹہ ہو گا اور جو خاکسار کے ساتھ ہمارے علماء شریک ہوں گے وہ بذریعہ ویڈیو لنک کے ہمارے ساتھ یہاں شامل ہوں گے پروگرام میں ہمارے ساتھ مکرمہ شاید مناسب ہیں کرم ہے موسم ہے مطلب بندی شاہ صاحب السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ لڑکی اگر پیکیج نہیں ہے شام آج جہاں بدقسمتی سے محمد یار بات سے کہ میں بٹی ہوئی ہے ہمارا تعلق اللہ تعالی کے فضل سے اس جماعت کے ساتھ ہے جس کے معنی ہیں خود موجود ہے جن کے متعلق رسول کی روشنی میں خبر دی تھی وہی مسیح اور مہدی ہیں جن کی آج تمام امت میں سب لوگوں میں جن کے مطالعہ کا انتظار کیا جارہا ہے آپ چوتھی صدی کے سر پر اللہ نے آپ کو کا بیان کی گن بستی میں مبعوث کیا وہاں آپ نے یہ دعویٰ کیا کہ آپ کی طرف سے اس میں اس کام کے لیے اس مسیح اور مہدی کے لیے مقدر تھا یعنی اسلام کے عالم اسلام کی خدمت رسول کی قسم کی خدمت کیا جاتا ہے نہ کہ محفوظ کیا تھا آپ نے مسلمانوں کو دعوت دی کہ وہ آئین اور اس میں اس کام میں اس کار خیر میں آپ بھی شامل ہو تھا کہ صدیق سے میری طرف آؤ اسی میں خیر ہے ہیں درندے ہر طرف میں عافیت کا ہوں حصار ہمارے آقا دوجہاں حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے اسی پیاری پیارے کے متعلق جس نے آپ کی امت میں پیدا ہونا تھا اس نے آپ کے دین کی خدمت کرنی تھی ابن مریم کے نام سے بھی آپ کو یاد کیا تھا وجہ یہی تھی کہ مقدر تھا کہ وہ سلوک جو مسیح کے ساتھ ہوا تھا وہ اسی محمدی کے ساتھ بھی ہونا تھا الاستسلام ابو سوئے تو اس وقت ان لوگوں سے آپ کا واسطہ پر اس وقت مردانہ منی آزمانے وہ جو پہلے سے منتظر تھے انتظار کر رہے تھے رکھے کہ وہ مسیح کب مضبوط ہوں تو وہی سب سے پہلے اس کے منتخب نے اس موقع پر بنی اس کے دشمن بنے ہر طرح کا ہر طرح سے انہوں نے کوشش کی ہے اس کو کرنے کی سولی پر چڑھنے کی کوشش کی یہاں دیا گیا لیکن خدا تعالیٰ نے انہیں مقام رکھا وہ خدا تعالیٰ کی نظر میں مصروف ہے حضرت مرزا غلام احمد قادیانی علیہ السلام نے جب دعویٰ کیا تو آپ کا بھی یہودی خصلہ نام نہاد مسلمان اور اہل علم اس پر آپ انہوں نے کوئی دقیقہ نہیں چھوڑا مسیح محمدی کو بھی ختم کردیا جائے آپ کو کے خلاف کفر کے فتوے کیوں کہ آپ کے خلاف قتل سازشیں کی گئیں آپ کے مختلف نام رکھے گئے آپ کا نام کا فرج الزام رکھا گیا لوگوں کو فریب دو کہ کے ذریعے sexy اس سے آسمانی آواز سے متنفر کرنے کی کوشش کی گئی ایک بار پھر دیکھا کہ وہی تاریخ دہرائی گئی جس سے خدا تعالی کے مسلمانوں سے ہوتا رہا تھا وہ پھر ہم نے دیکھا کہ کس طرح سے وہ سب ہوا لیکن جماعت احمدیہ کی 125 سالہ تاریخ بات پر گواہ ہے کہ جہاں شیطان کے چیلوں نے پورا زور لگایا کہ کسی طرح سے اس کو ختم کریں خدا تعالیٰ کا وعدہ ہمیشہ کی طرح روح کے کتب اللہ لاغلبن انا ورسلی اللہ نے فیصلہ کر چھوڑا ہے کہ میں اور میرے رسول تو ناظرین اس سے پہلے کے ہم نے ان ح اور جھوٹا پروپیگنڈا کیا جارہا ہےالات کے متعلق کچھ انشاءاللہ ایسا سوال بھی آیا ہے جہاں پر ہمارے نظریات ایک سو تیس سالہ تاریخ جماعت احمدیہ کی ہے اس میں وہ کسی جماعت کے ساتھ اقتدار ہوتی ہے اس سے پہلے ہم سامنے کون سے بات یاد رکھنا چاہتے ہیں محنت سے گزر رہے ہیں شیطان اپنے چیلوں کے ذریعے سے جماعت احمدیہ کے خلاف جھوٹ اور فریب کا حربہ استعمال کرتے ہوئے پورا زور لگانے کی کوشش کر رہا ہے پاکستان مصری میڈیا میں تو شروع سے ہی اس خدمت کو انجام دیتا ہے ایسے صحافی بھی مل جاتے ہیں جو بکاؤ ہیں جو صحافت کا کسی طرح سے بھی لحاظ نہیں رکھتے اور جھوٹ اور فریب کو کمال کرتے ہیں جیسے اس نے کوئی غلطی نہیں ہے یہ دل کا تو ایک خاص ایجنڈا کے تحت مہندی کے ساتھ یہ کہ اس مہم چلائی جارہی ہے تو ہمارے اس پروگرام میں ہم انشاءاللہ کچھ ایسی باتیں ہی کچھ ایسی تھی رکھیں گے اس سے پہلے یہ بھی خدا تعالیٰ کا فرمان ہے جو ناظرین کے سامنے رکھنا چاہیے حافظ عطاء اللہ مومن فاطمہ فرماتا ہے کہ یا ایہا الذین امنوا ان جاءکم فاسق بنبا فتبینوا ان تصیبوا قوما بجہالۃ کل تم نہ زمین مالا ہو تمہارے پاس اللہ کو یار کوئی خبر لائے تو اس کی کر لیا کرو ایسا نہ ہو کہ تم جہالت سے کسی قوم کو نقصان پہنچا بیٹھو پھر تمہیں اپنے پشیمان ہونا پڑا ہے میاں زندہ رکھیں گے لیکن اس سے پیشتر خاک سر آپ سے معذرت بھی کرتا ہے کہ ہمارے پاس سوالات مصروف ہیں یا اپنی محبت میں کرتے ہیں ان کو قتل کر رہے ہیں آج بھی ہم کوشش کریں گے لیکن باہر کچھ سوالات رہ جائیں گے ہماری کوشش ہوگی کہ آئندہ پھر کسی پروگرام میں ہم کو ساتھ شامل کریں اور ان کا جواب آپ کو سب سے پہلے خاکسارم کرم شمشاد قمر صاحب کے پاس جانا چاہے گا یہ شاہ صاحب اسی طرح ایک ایک ٹی وی پر کچھ اینکرز صاحب ان سے جو افریقی کمیشن کے بارے میں ذکر کر رہے تھے تو وہاں انہوں نے یہ ذکر بھی کیا کہ جماعت احمدیہ میں بھی ہے اور وہ ہندوستان میں ملتے ہیں تو وہ بعد میں مجھے مزید بات نہیں کی لیکن اشارہ کیا اسرائیل میں ہونا اور پھر تعلقات ہیں ان کے پہلے سے یہ کام بہت راز کیا جاتا رہا ہے جس کی کوئی حقیقت نہیں ہے تو اس کے متعلق اپنے ایک اور ناظرین کو بتائیں عوذباللہ من الشیطان اللہ الرحمن الرحیم جزاک اللہ بہت شکریہ عرض یہ ہے کہ یہ جو اسرائیل کا موضوع ہے عوام کو صرف مشتعل کرنے کے لئے پاکستان میں یہ کاروبار بن چکا ہے کسی نے کوئی سیاسی فائدہ اٹھانا ہوں کسی کو کوئی نقصان پہنچ رہا ہو اس نے اپنے آپ کو نقصان پہنچانا ہے لے دے کے ایک مظلوم احمدیہ جماعت ان کو ملتی ہے کہ ختم نبوت کا آشنا تھا وہ کے خلاف کوئی بھی اس خیال انگیز کوئی محبت پیدا کردی فائدہ اٹھاتے ہوئے یا پھر جو ان کے اوپر پر پر پر اس قسم کے حالات ہیں کوئی اپنے کیا کر رہا ہے اپنے مفاد کے لیے کر رہا ہے ارم پڑھا جاتا ہے ہم لوگوں کو غلط اور جھوٹے بیانات دیے اور اس کے لیے پھر یہ جاتے ہیں جو عوام کے اندر زیادہ مشتعل کرنے والے ہوتے ہیں جبکہ کچھ نہیں اور اس کے لئے یقینی طور پر بات صحافی بھی استعمال ہوتے ہیں جنہوں نے یہ ذکر کیا ہے کام کے لئے استعمال ہو رہے ہیں کہ نہیں میں ان پر الزام تو نہیں لگا تھا لیکن پلیز کرتی ہیں کہ اگر صحافی نہیں تو کم از کم ان کو علم تو ہو نا ٹی ٹونٹی ہونی چاہیے بغیر تحقیق کے یوں ہی بات کر دینا اس کے پیچھے کوئی اور چیز ہے اب یہ کہا جاتا ہے کہ باقی سب اسرائیل کے اندر پاکستانی احمدی ہیں اسرائیلی فوج میں ہے کبھی بھی کہا جاتا ہے کر رہے ہیں یہ بالکل جھوٹ کسی قسم کی کوئی حقیقت نہیں ہے کہ کوئی پاکستانی اسرائیل موجودہ حالت حیرت مجھے یہ ہے کہ جیسا کہ آپ نے ذکر کی ہے کہ آپ مولوی تو اس قسم کے جھوٹ بولتے رہتے ہیں ان کا کام ہے حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے آج سے چودہ سو سال پہلے بیان فرمادیا تھا ان کا کردار لیکن حق یہ ہے کہ پڑھے لکھے لوگ جو اپنے آپ کو صحافی کہلاتے ہیں ان کو بھی کیا ابھی تک معلوم نہیں ہوا کہ ان کے ایجنٹ کون ہے اب تو معاملہ بالکل سامنے آگئی ہیں وہ لوگ سامنے آگئے ہیں وہ ملک خان نے آ گئے ہیں کتے ہیں پتہ نہیں ہے اسرائیل کے ایجنٹ کون ہے اور اس کا حل کے لئے کون کام کر رہا ہے کون کام نہیں کر رہا اگر ان کو نہیں پتا تو میں ان کے ایک اینکر صحافی صاحب کا ایک واقعہ بیان کرتا ہوں ان کے مشہور ایک پروگرام کرتے ہیں بتایا کہ میں کل کے ایک ملک میں طالبان دبئی میں گیا تو وہاں شیخ پہلی دفعہ میں نے ایک آدمی کو دیکھا لمبی گاڑی سٹی ٹو پی ٹی بہترین سرائیکی اردو عربی بغیر زبان بولتے تھے مجھے بڑی خوشی ہوئی ان سے مل کے بات کر کے چنانچہ اسی اثنا میں وہ کہتے ہیں کہ انہوں نے تو نماز پڑھنے کے لئے چلے گئے وہ نماز پڑھ مجھے حیرت ہوئی واپس آگئے کی نماز کے لیے نہیں گئے تو میں نے اپنے ساتھیوں سے پوچھا کہ یہ کیا بات ہے ماشاءاللہ داری بھی ہے سب کچھ ہے لیکن نماز کے لیے کیوں نہیں آتے انہوں نے کہا کے لئے تو مسلمان نہیں ہیں یہ تو یہودی ہیں مجھے واپس آکر میں نے آپ سے بات کی کہ آپ مسلمان نہیں ہیں اتنی روانی کے ساتھ بولتے ہیں یہ کہا کیا آپ نے تو اس شخص نے وہ کہتے ہیں مجھے بتایا کہ میں تو 18 سال ڈیرہ غازی خان کی بطور امام مسجد کام کرتا رہا ہوں وہ کہتے ہیں کہ میں یہ سن کر چکرا کے رہ گیا کہ یہود مسجد میں امامت کرواتا رہا ہوں اور مطلع کر رہا ہوں کرکٹ میں اس سے کانٹیکٹ میں انہوں نے یہ بات کی یہ بات اس نے کی ہے کہ میں 18 سال تک اس عشق میں مر جاواں یہ میرا کام تھا میری ملازمت جو بھی میری مجھے کتنی مساجد میں وہ مانگتی کر آرہے ہوں گے کتنے مدرسے کو چلا رہے ہوں گے کتنے مولوی فارغ ہوکر نکلے ہو مولویوں کو انہوں نے کیا پڑھایا اور وہ مولوی آج ہیں جس کی وجہ سے یہ سارا کچھ ہوا پڑا ہے یہ جماعت احمدیہ کو کہہ رہے ہیں کہ یہ المسائل کے ایجنٹ ہیں ان کو ذرا تھوڑا ٹھیک کر لینی چاہیے بڑا واضح ہو چکا ہے انڈیا شروع سے بیان کرتی ہے کہ ٹرین کے لئے کام کرنے کو دل نہیں کر رہا لیکن ان کو اگر سمجھ نہیں آرہی تو کی بات یہ ہے کہ اسرائیل کے اندر یہ درست ہے کہ ہم بھی ہیں لیکن کیا صرف ہم ہی ہیں اور وہ پاکستانی ہیں اس میں کوئی شک نہیں ہے جدی پشتی عرب ہے وہاں کے رہنے والوں احمد ہی نہیں اسرائیل کے اندر اس وقت بہت کم ازکم پندرہ لاکھ سے زیادہ مسلمان ہیں اگر اس ملک کے اندر وہ لوگ جو جدید کشتی وہاں کے رہنے والے ہیں عرب ہیں انہیں آمدید احمدی اگر ناول اسلام کے غدار ہیں وہاں صرف رہنے کی وجہ سے جلدی آپ کی جاتے ہیں وہاں تو مسلمانوں کے بارے میں انیس سو اٹھائیس میں قائم ہوا تھا جبکہ اسرائیل 1948 میں ٹائم ہو رہا ہے اور آج تک ہیں دوسری بات یہ ہے کہ اسلام ایک عالمگیر مذہب ہے اور جیسا کہ ابھی آپ نے لکھنا شروع میں بتایا کہ حضرت مسیح موعود علیہ السلام نے اسی عالمی مذہب کو دنیا میں پھیلا مولانا پوری دنیا میں اس نے اپنی جماعتیں قائم کرنی ہیں اس سلسلے میں تعلیم کیا ہے کہ اگر کسی جگہ حکومت ہے اس غیر مسلم حکومت کے ماتحت رہنے والے مسلمانوں کو کیا کرنا چاہیے یہ عمران بھائی اللہ تعالی قرآن کریم میں عطا فرما رہے اور آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی حضور صلی اللہ وسلم نے فرمایا اگر موقع نہیں ملا ایمان وطن سے محبت ایمان کا حصہ ہے وطن سے یہ نہیں بتایا پاکستان انگلینڈ کی سیر انڈیا سے محبت ایمان کا حصہ ہے یا سے یا سعودی عرب یا کسی کو اتنا کہ نہیں کبھی مسلمان پوری دنیا میں جس ملک کے اندر رہتا ہے وہ اپنے ملک سے محبت کرے اور اسی طرح قرآن کریم میں اللہ تعالیٰ قرآن کریم میں اللہ تعالی بیان فرما رہا ہے کہ یہ نابینا امام ہو ایمان والو اللہ کی اطاعت کرو یہ کام کرو اور جو بھی علامت ہے تمہارے اوپر یعنی جو بھی حکمران ہے اس کی اطاعت کرو اگر کسی معاملے میں تم اختلاف ہو جاتا ہے بھائی متنازع بل پیش آیا فارغ ہو اللہ و الرسول رسول اگر تمہیں تمہارا آپس میں کوئی تنازعہ پیدا ہو جائے تو ایسی صورت میں پھر تم اس کو اللہ اور اس کے رسول کی طرف لوٹا اب اللہ اور اس کے رسول کی طرف لوٹانے کا کیا مطلب ہے چاہیے کہ جو شرعی حکم ہے دو قسم کے ہوتے ہیں ان کے انفرادی ہیں ذاتی طور پر ذات سے تعلق رکھتا ہے پڑھنا نماز پڑھنی ہے روزہ رکھنا ہے دینی ہے حد تو چلے پھر بھی دوسرے ملک میں جانا پڑ لیکن باقی جو چیزیں ہیں وہی بات سے تعلق رکھتی ہے آپ دوسرے لوگوں سے تعلقات کس طرح کے رکھتے ہیں ان کے ساتھ کتنے ہیں یہ انسان کی ذات سے تعلق رکھتے ہیں اپنے سے تعلق رکھتے ہیں دوسرے وہ ہیں جو حکومت سے تعلق رکھتے ہیں حکومت کس طرح کرنی ہے حکومت حکومت میں لے گئی اگر حکومت نہیں ہے تو پھر مسلمانوں کو کس طرح اگر مسلمان حکمران ہے پھر تو حکمرانوں کی ذمہ داری ہے کہ کس طرح وہ قانون کو لاگو کرتے ہیں غیر مسلم حکمران ہیں اسلام کی یہ کہہ کر کے پھر بھی ہمارا کام یہ ہے تمہارے ذاتی معاملات میں مذہبی طور پر نہیں تھے اور بس ابھی آزادی کلمہ پڑھ سکتے ہو نماز پڑھ سکتے ہو روزہ رکھ سکتے ہو خدا کی عبادت کر سکتے وہ تمہیں مکمل ہے تو پھر تمہارا کام ہے کہ ایسے علماء امر کی اطاعت کرو اللہ کے نام والا گانا لیکن اگر کہیں گورنمنٹ روکتی ہے تو پھر تمہارا کیا کام ہونا چاہیے تعلیم دی میں کہیں نہیں لکھا کہ وہاں کے رہنے والے کہاں سے بغاوت کر دی میں رہتے ہوئے پتا برپا کرنا یا بغاوت کی فضا پیدا کرنا یہ اسلام کی تعلیم نہیں ہے اسلام ایک عالمگیر مذہب ہے یورپ میں رہنے والے یہاں کے بغاوت کر دی یہ دیکھے ہیں اگر پاکستان میں رہنے والے ایک انڈیا اور پاکستان پاکستان میں رہنے والا ہوں اور بغاوت کر لیتے ہیں تو آپ کیا محسوس کریں گے اس کا مطلب ہے جو چیز اپنے لیے پسند نہیں کرتے وہ دوسرے کے لیے بھی پسند نہیں کرنی یہ ہمارے پارک آپ کا انتظار نہیں تو پھر مسلمانوں کا بھی کام ہے اگر وہ آپ کو عبادت سے روکتے ہیں شادی پر جو مذہبی آزادی ہے اس کے اندر وہ ڈالتے ہیں وہ اسلام کی تعلیم کہ وہ ان سے بات کریں عدالت میں جائیں اور اگر عدالت سے بھی تمہیں انصاف نہیں ملتا تو پھر کتاب ہے حضرت کی استطاعت نہیں ہے تو پھر صبر و استقامت سے کام ہے وہ کریں باہر رہتے ہوئے ملک کے اندر رہتے ہوئے وہاں سے بغاوت کرنے کی اجازت اسلام نہیں دیتا اللہ تعالی فرماتا ہے کچھ لوگ کہتے ہیں کہ جن کو فرشتے جب فارغ کریں گے تم سے پوچھیں گے کہ کیسی ہے تمہاری کمزور بچے ہم کچھ نہیں کر سکتے تھے فرشتے جواب دیں گے قالو الم تکن ارض اللہ واسعۃ ا زمین بنتی نہیں تھی اب تو اجنبی ہے لیکن اس سے اگلی آیت میں یہ بھی فرمایا کہ ایسے لوگ جو ہجرت کی بھی باربی کارٹون یہ بنیادی تعلیم ہے وہاں پے نہیں ہے اور جو وہاں کا باشندہ ہے وہاں کا رہنے والا ہے جلدی بستی اس کے لیے یہ اسلام کی تعلیم ہے اور اسلام کی تعلیم ہیں پھیلانے کے لیے حضرت مسیح موعود علیہ السلام آئیں اور اس پر عمل کرے کہ جماعت احمدیہ یہ جو مسلمان ہے وہ کسی بھی ملک میں رہنے والا ہوں اس بات کی اجازت نہیں ہے کہ وہ وہاں سے اپنے ملک کے خلاف بغاوت کرے جماعت احمدیہ کی پالیسی ہے جو اسلام کے تعلیمی اسی کے اوپر جماعت احمدیہ یہ روح بھی پوری دنیا میں جس ملک کا باشندہ ہے وہ ملک کا وفادار کیا آپ نے اس سے غداری یا اپنے موڈ سے بے وفائی یہ جماعت احمدیہ کے خون میں شامل نہیں ہے یہی چیز ہے کہ جب اگر وہ غیر مسلم حکمران ہمیں خدا کی عبادت سے نہیں روک سکتے ہمیں اسلام پر عمل کرنے سے نہیں روک سکتے کتاب ہمارا وہ اپنے آپ سے ملاقات کریں گے جو نیکی اور گناہ کے کاموں کے کاموں میں ان کے ساتھ بیٹھ کر کتابوں نہ کرو مہک ملک لے ان کے ساتھ تعاون کرنا اسلام کی تعلیم ہے اگر وہ جس ملک میں رہتے ہیں اپنے ملک کے حکام سے ملتے ہیں اس میں اسلام سے غداری کی ہے یہ تو اسلام کی تعلیم کے عین مطابق ہے اسلام علیکم اس بات کا دیتا ہے اپنے  ہیں تو یہ کام کر رہے ہیں اور ان کے لئے اہل سنت کا یہ بھی اساتذہ کی تعلیم کے حق میں ہوںکام سے اچھے تعلقات رکھتے ہیں آپ سے مل کر کسی دوسرے کا استقبال کرتے ہیں تو اس کا مطلب غداری نہیں پاکستان کے حکمرانوں کی حکمرانوں کے مظالم کے دوسرے کے سلسلے میں ان کا استقبال پاکستان کے حکمرانوں نے کبھی انڈیا کا  اس کے علاوہ باقی بچے گا کہ نہیںدورہ نہیں کیا ان پاکستان کا دورہ نہیں کیا یہ کہنا کہ صرف دورہ کرنا یہ کسی کا استقبال کرنے سے روزہ داری ثابت ہوگی کرنی ہے تو اسلام یہ بات کر لینا جس کے نام کچھ اس طرح ہے نہ پاؤں ہے تحقیق کی ہے صرف عوام کے استحصال کی خاطر مجنوں بنا کے اس کے اوپر مدرسہ لوگوں کو مشتعل کرنا غلط بیانی سے کام لینا یہ مناسب نہیں ہے یہ خطا ہے یہ اسلام کی تعلیم ہے کہ اللہ تعالی فرماتا ہے اللہ نے مودی اللہ کا ذکر کرنے والوں کو بال مصطفیٰ سلسلہ رحمت ہیں ہمیں آپ کی رحمت سے لینا ہےکل پسند نہیں کرتا لہذا جو اس طرح جھوٹ بول کے جماعت احمدیہ کے خلاف ثابت کرنا چاہتے ہیں اس ہے ہیلو صرف اس لئے کہ عوام کو منتقل کر کے نہتے لوگوں کو ان کے اوپر ظلم کرواؤ اس سے باز آنا اور اسلام کی صحیح تعلیمات کے مطابق عمل کریں جزاک اللہ اسی طرح انہیں صاحبان نے آپ سے یہ سوال ہے خاص خاص کرے گا انہیں سلمان نے پھر اس کردار کا بھی ذکر کیا جو احمدیوں کے خلاف پنجاب اسمبلی میں پیش کی گئی تو اس قرارداد میں ایک خاتون ہے اور یہ کیا گیا تو ایک تو میں اب اس بات کی خوشی ہے کہ انہوں نے آپ کا مقدمہ تو ٹھیک کیا کہ خاتون کے معنی آخری کیوں نہیں لیکن بعد میں اس کی وضاحت کرتے ہیں اس کے لئے سے مبارک سے وہ دھوکہ اور فریب کی طرف آرہے ہیں اور وہ یہ مانے اس کے کرتے ہیں کہ خاتون ترجمان بیٹیوں کی مہر ہے اور کہا گیا کہ ماہ رجب لگ جاتی ہے تو لاہور یااللہ پھر اس طرح سانس بن کے تو نبوت کا راستہ بند ہو گیا تو اس کی کیا حقیقت ہے اس کی وجہ سے متعلق ہے اور اس کے متعلق آپ کا ہمیں کچھ وضاحت فرمائیں علیکم رحمت اللہ جزاک اللہ طارق صاحب میں بیان کرتا ہوں اس بات کا تعلق ہے رسول پاک صلی اللہ وسلم چمن بیجین ہے وہ مہدی حسن فلم ختم نبی نہیں مانتے جو سو فیصد جھوٹ ہے اللہ تعالی کے فضل سے سب کے دل سے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو خاتم النبیین ویسے بات سمجھنے والی یہ ہے کہ درحقیقت ہمارا اور غیر احمدیوں کو غیر مسلم بھی مسلمان ہے ان کا کے بارے میں کوئی اختلاف حقیقی ہے نہیں زیادہ کہتے ہیں کہ آپ خاتم النبی کوئی بھی معنی کر لیا میں وہ منظور ہیں اللہ سلم کی واپس آنے والے مسیح نبی اللہ کو نکالیں گے ہم مسیح موعود علیہ السلام مولوی غلام احمد صاحب کی اس بات کو ثابت کرنے کے لئے تیار ہیں لیکن تمام احمدی مانتے ہیں کہ اللہ ایک ہے اللہ کے نبی نے ہی کتب ہیں خیر و شر کا نام ہے ایمانیات پر ہمارا ایمان ہے اس طرح سارے کے سارے ہی معنیات کو مانتے ہیں تمام عملی ارکان اسلام کو مانتے ہیں اسی طرح غیر ہم دیوانے اسلام کو مانتے ہیں ان تمام باتوں کے باوجود سارے غیر اہم بھی صحیح ہے آج کل تھوڑا سا طبقہ پیدا ہوا ہے جو اس بات کو نہیں مانتا مولانا عبدالرحمن بریلوی ہیں دیوبندی ہیں جو اہل حدیث ہیں اوکے ہیں اس سارے کے سارے حضرت مسیح نبی ایک نبی اللہ تعالی ان کا نام اللہ کے رسول صلی اللہ وسلم نے صحیح مسلم میں چار دفعہ نبی اللہ بیان کیا ہے وہ امت محمدیہ میں نے اسلام کی خدمت کے لیے ان کا آنا مانتے ہیں اصل جو اختلاف ہے وہ صرف اس بات میں آکے وہاں یا نبی اللہ صاحب کا بنی اسرائیل والے آئیں گے جا امت محمدیہ میں ایک نبی اللہ پیدا ہوں گے آیت خاتم النبیین کی اللہ تعالی نے فرمایا ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم خاتم النبیین ہیں یعنی آپ خاتم ہیں مہر ہیں انکی ان بین کی تو مہر کا کیا کام ہے امام راغب اصفہانی رحمہ اللہ نے اپنی کتاب مفردات امام راغب میں لکھا ہے کہ اصل حاصل ہو یہ لگتی ہے تو اس کو اپنے نفس پیدا کر دیتی ہے صلی اللہ علیہ وسلم کی مہر جس پر لگے گی اپنے نقوش منتقل کر دے گی دیوبندی مکتبہ فکر کے جو بانی حضرت امام کاظم نانوتوی رحمہ اللہ انہوں نے لکھا ہے کہ حضور صلی وسلم کی جو موت ہے خاتمیت ہے اس کے ذریعے ہی صاحب کا انبیاء کی جو موت ہے ان کی اگر بالفرض بعد زمانہ نبوی صلی اللہ علیہ وسلم کوئی نبی پیدا ہو جاتا ہے تو اسے خاتمیت محمدی میں کوئی فرق نہیں پڑتا کیا نبی پاک صل وسلم کی مہر جو سابق انبیاء کی تصدیق وہ آئندہ آنے والوں کے لئے بھی کام کرے گی مہر مزار کا طواف پاک دامن اس کا مطلب ہوتا ہے جس نے مہر لگائی ہے وہ پرائز کر رہا ہے اس کو ڈاکومنٹیشن کر رہا ہے یہ لازمی نہیں کہ ہمیشہ محبت کام کرنے کے لئے آتی ہے السلام علیکم ہیں کہ نبی صلی اللہ وسلم کی محتاج ہے خاتمنبین کی بہت جو ہے وہ نبوت کو بند کر دیتی ہے ہوتا کہ آج سارے بریلوی سارے اہل حدیث مانتے ہیں کہ خدمت اسلام کےلئے مسیح نبی اللہ نے آنا ہے کہ وہ غیر مشروط طور نہ رہی یہ تو پھر بعد میں گویا دو حصوں میں تقسیم ہو گی فیصل آباد عیش کے لحاظ سے کہا تم نے بعد میں صلی اللہ علیہ وسلم کے احسانات اللہ پرانے آ جاتے ہیں ہیں دو ہزار دینے کے لحاظ سے اپنی تعلیمات کو بیان کرنے کے لحاظ سے تو سابقہ بنی اسرائیل کے جو مسیح ابن مریم ہی وہ خان بنے وسط کا خاتمہ کعبہ دو حصوں میں تقسیم ہوتا تو کسی طور پر اس نے ہم کہتے ہیں کہ حضرت عیسی علیہ السلام جو بنی اسرائیل میں نبی بن کر آئے تھے وہ فوت ہوچکے ان کے رنگ میں رنگین ہو کر خدا کی نعمتیں اور محمدیہ میں ایک نبی اللہ پیدا کیا ہے اور وہ نبی اللہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی اور اطاعت میں ہے جیسا کہ انسان خود عطا فرمائے نبوت ملنے کے لیے دو شرط ہے اور رسول اللہ کی تعریف کریں اور دوسرا محمد مصطفی صلی اللہ سلم کی اطاعت کرے وہی اس دور میں اس دی بن سکتا ہے شہید بن سکتا ہے صالح بن سکتا ہے نبوت کا درجہ حاصل کر سکتا ہے باقی سنا ہے کب لگنا ہے ڈھیر سارا لگنا ہے اپنے پاس رکھا ہے اللہ تعالیٰ فرماتا ہے کہ ہم بہتر جانتے ہیں کہ کب کس کو نبی بنا ئیں اللہ اعلم حیث یجعل رسالتہ ہو اللہ آپ بہتر جانتے ہیں کہ آپ اپنی رسالت کا آغاز کرتا ہے تو پھر کا ایک اور یہ ہے کہ جب وہ کسی پر لگتی ہے آپ نے ان کو چھوڑ جاتی ہے محمد مصطفی صل وسلم کی محبت پر لگے گی وہ اجنبی بن سکتا ہے محمد مصطفی صلی وسلم کے کسی نیک پر مہر لگی وہ نیک صالح بن سکتا ہے شہید پر مہر لگی وہی بن سکتا ہے مولوی وہ صدیق نقوش پیدا کر رہی ہے اسی لئے نے آدھی سنے صلی اللہ علیہ وسلم کو ہمارے لئے رحمت قرار دیا ہے دوستوں پیاروں رحمت ہے زحمت نہیں ہے حضور صل وسلم کی عظمت کو بند کرنے نہیں ہے اور احمد تھے موسی علیہ السلام علیکم کہا تھا کہ اے میری قوم عاد کو اللہ نے جب تم نے تم نے ملک میں اللہ کی نعمت کو یاد کروا رہے تھے تو ہم تو ہر روز ہر نماز میں دعا کرتے ہیں اس دن صراط المستقیم صراط الذین انعمت علیھم کا ان لوگوں کا راستہ دکھا دیں جن پر انعام ہوا واٹ انعام ہے اس انعام سے ڈرتے کیوں ہو اللہ تعالیٰ کی عطا ہے جو حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کی دین ہے آپ کے ذریعہ ہے یہ ویسے ہی بات ہے کہ نبی صلی اللہ وسلم کی خاتون بیزی ہو کیا آپ آخری نبی ہیں آپ کے پاس کسی قسم نبی نبی یا نبی ویسے لوگوں کو آج سے تقریبا گیارہ سو سال پہلے حکیم ترمذی رحمہ اللہ نے فرمادیا تھا جو یہ تاویل کرتا ہے کہ آپ ماسنجر ہونے کے لحاظ سے آخری ہیں ادھر انہوں نے کہا تھا کہ حضرت الحلاق جو ایسی تاویل کرتا ہے کہ آپ اللہ سب کو ختم کرنے والے ہیں نبیوں کے آخر پہ ہیں علاقوں اور ناکام لوگوں کی ہے جیسے حضرت امام قاسم نانوتوی نے فرمایا تھا کہ اگر بالفرض بعد زمانہ نبوی صلی علیہ وسلم بھی کوئی نبی پیدا ہو جاتا ہے تو اسے خاتمیت قسم کا کوئی فرق نہیں پڑتا تو سارے مانتے ہیں کہ رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد وسیلہ بنانا ہے تو وہ جو حسن پیدا کر نے والی ہے جس پر لگے گی اس کے لیے رحمت کا مجھے بھول گئی تو اسے ڈرتے کیوں ہیں جو کہتے ہیں کہ ہم نعوذباللہ این کے غدار ہیں ہم آئین کو نہیں مانتے پاکستان میں بسنے والا جو جو بندہ کہتا ہے کہ میں ان کو مانتا ہوں آئین کی شق میں لکھا ہے کہ کسی بھی طرح کا کوئی مسئلہ نہیں فارمر نہیں آ سکتا مولانا ہے تو کیا گویا اس طرح ملک اس عمل کو اسلام سے خارج ہے فرمایا تھا صحیح مسلم میں دجال کا دور دورہ ہوگا دیکھا جائے گا اسلام کو نقصان پہنچائے گا تو اس وقت اسلام کی حفاظت کے لیے مسیحا حماسی نوی اللہ ان حضرت مرزا غلام احمد قادیانی کو مانتے ہیں یہ مر کر رہے ہیں شکریہ آپ نے بالکل درست فرمایا کہ معنی وہی قابل قبول ہے جو قرآن مجید اور سنت میں فرق ہو کر کے معنی ختم کر دینے کے تو بالکل برخلاف ہے رات اور کابل پیدا ہونے والے کے اپنے بیانات بھی ملک بہت شکریہ تو اکثر یہاں آ گئے وہ کرم شاہ صاحب کے پاس جانا چاہے گا چپ چاپ 11 شعبان کی طرف سے یہ بھی کہا گیا ہے ان کے حوالے سے پتہ نہیں بات کیسے پہنچی اگر صحیح کرتے ہیں کہ کسی سے مجھے یہ خبر ملی ہے اسے خبر ہے خبر کے بغیر تحقیق کے آگے سنادی قسم کی حدیث کے مطابق ایک شخص کے لئے جھوٹا ہونے کے لئے کافی ہے کہ وہ سنی سنائی بات اس طرح سے آگے کرتے ہیں وہ آگے اپنی بات کو اس طرح سے چلاتے ہیں اور کہتے ہیں کہ گویا کہ جو پاکستان میں رہنے والی جماعت ہے اور جو لندن کاجو مرکز ایوب کا ہیڈ کوارٹر ان کو آپس میں اختلاف ہو گیا اس کمیشن کی رپورٹ وہ یہ کہ وہ پاکستان والے جاتے ہیں کہ اس میں آپ کو شامل ہو اور غیر مسلم اپنے آپ کو تسلیم اور لندن والے آگے یہ دھمکی دے رہے ہیں کہ اگر ایسا کرو گے تو آپ کا یہ جو فرینڈ نہیں ہے وہ کم کر دیا ایک عجیب سی یہ صورتحال کوئی سر پہ نہیں ہے تو بار حافظ کرو غالب نے ہمارے ساتھ کچھ روشنی ڈالیں یہ ہے کسی نے بھیجا تھا میں نے یہ سارا سنا ہے اور اگر اس میں تو اس کے اندر ہی تضاد موجود ہے سننے کے بعد فورا انسان سمجھ جاتا ہے کہ یہ بالکل کھڑا ہوا جھوٹ ہے یہ جو یہ بیان فرمائی ہے کسی بہت زیادہ تحقیق کی ضرورت نہیں پڑتی میں نے کہا اس میں ہمیں پہ سچائی نظر نہیں آتی یہ ان کی خواہش ضرور خارج کیا کرتے ہیں کہ انہوں نے کیا لیکن حقیقت اس کے اندر نہیں ہے ان کی اپنی باتیں انہوں نے وہاں بیان کیا ہے کہ پھر بھی میرے محبوب نے بتایا ہے جو شراب میں ہے بات ہوئی ہے طلباء کے اندر کیا لکھا ہے کہ ہم سسٹم کا حصہ بننے جارہے ہیں اور ان کا حل مقدمہ کیوں تسلیم کرنے جا رہے ہیں آگے بیان کرتے ہیں کیونکہ ہمارے یہاں کوئی تکلیف ہمیں پاکستان میں تمام حقوق حاصل ہیں ہمیں مذہبی آزادی حاصل ہے بچے سکول اکثر ہمارا جب ہمیں مذہبی آزادی حاصل ہے حکومت ہے تو تسلیم کرنے میں کیا حرج ہے لیکن اگلے ہی سانس میں کرتے ہیں کہ انکار کیا ہے کہ لندن سے کنٹرول کیا جا رہا ہے کہ سلیمان نہیں تو پھر انہوں نے آگے سے کیا جواب دیا کہتے جی انہوں نے یہ نہیں پتا یہ کہاں ہے ہم اپنا ہمارے مسائل کا ادراک ہے ہم تو کسی فورم پر جائیں اگر آپ نے میری بات جو میں نے ان کی بات اسپورٹ کی ہے غور سے سنی ہوں آپ کو اس کے اندر ہزار نظر نظر آئے گا اور یہ مذاق بتا رہا ہے کہ بچارے نے بڑی محنت کے ساتھ جھوٹ پکڑا گیا پہلے بتا رہے ہیں کہ وہ یہاں پاکستان والے بھی کہہ رہے ہیں کہ ہم سے کوئی تکلیف نہیں ہے یہاں پر ہمیں پاکستان میں تمام حقوق حاصل ہیں ہمیں تمام مذہبی آزادی حاصل اور لندن والوں کو کیا کہہ رہے ہیں کہ آپ تو بہت مزے لوٹ رہے ہیں آپ کو پتہ نہیں کتنے مسائل میں گھرے ہوئے ہیں ہم کھاتے میں ہیں ہو ہم سے بات نہیں کر سکتے یہ بات درست ہے آپ کی کہ ہم کسی فورم پر جا کے بات ہی نہیں کر سکتے لندن والوں کو عید مبارک یہ کہاں سے سوچو گے کہ ہمیں پوری آزادی حاصل ہے میں تمام حقوق جو میں نہیں ہے ان کے حقوق کے بات کر سکتے ہوں گے اپنی میں کچھ بھی نہیں کر رہا ہوں میں انکار کر رہے ہیں کہتے ہیں کہ دروغ گو را حافظہ نہ باشد کہ جو جھوٹ بولنے والا بنتا ہے اس کا حافظہ کام نہیں کر رہا ہے پتہ نہیں تھوڑی دیر پہلے کیا بات کرنا چاہ رہا تھا اور تھوڑی دیر بعد کیا بات کر رہا ہوں پروگرام میں کوئی اور کر بھی کیا لیکن یہاں تو ایک دن ایک منٹ کا ایک ساتھ ایک ساتھ میں کہہ رہے ہیں کہ میں مکمل آزادی حاصل ہے اور اگلے ساتھ میں بیان کر رہے ہیں کہ ہم پاکستان والے ہیں ہم پے جا کے بات نہیں کر سکتے کیا بات کر رہے ہیں اپنی بات مستزاد کا مجموعہ ہے لیکن کیا کریں روٹین وہ بے چارہ مولویوں کو ساتھ ملا کے اس پہلے تو یہ کام مولوی کیا کرتے تھے اس کا مطلب ہے آپ کیسے ہو اور یہی خدا تعالی نے قرآن کریم کے اندر فرمایا تھا کہ انا کم کر دے دو کہ تم نے اپنا رزق بھی یہ بنا لیا ہے کہ تم چھپاتے ہو غلط بیانی سے کام کرتا ہے سورہ واقعہ میں اللہ تعالی نے فرمایا ہے یہ ان کا شیوہ ہے یار کوئی بات نہیں ہے پہلے نبیوں کے دور میں بھی یہی کچھ ہوتا ہے جھوٹ گاڑھا کرنے کے بعد طل مقدمہاق دے رہا ہوں اور یہی اور ایک بات میں اور آپ کو بتا دوں کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے آخ یہ آزادی ہے اس کو کہا جاتا ہے اور وہاں جو مقدمات بن رہے ہیںری دور کے مسلمانوں کو یہودیوں سے تشبیہ دی ہے یہ تو ہمیں کہتے ہیں عباس قرآن حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ آخری دور میں میری امت کے لوگ یہودیوں کے مشابہ ہو جائیں گے دوسرے کے مطابق ہوتا ہے ایک جوتی دوسری جوتی کے مشابہ ہوتی ہے یہودی کیا کام کرتے تھے قرآن کریم نے بہت ساری باتیں بیان ہوئی ہے لیکن میں ان میں سے صرف ایک بار ان کے اندر یہ پیدا ہو گئی تھی کہ اس دفعہ 12 میں پروانہ کس سورت کی آیت نمبر 32 اس میں تلاوت کر رہا ہوں کہ انہوں نے اپنے اخبار اور ان کو اپنے بچوں اور بچیوں کو اپنے مولویوں کو خدا کے علاوہ بنا لیا ان کو خدا کے سوا کسی کی عبادت نہ کرنا وہ ایک خدا ہے انہوں نے وہ مولویوں کے پیچھے چل پڑے اور ہم ان کے بھی چل پڑے اور اخبار کے پیچھے چل پڑے بچاروں کو کہنا پڑتا ہے وہ پھر جو مولوی کہہ رہا ہے ہے مصیبت میں پڑ جاتے ہیں اور دوسری بات ان کو بھی خدا تعالی نے یہ بیان فرمائی تھی کہ وہ کیوں کرتے ہیں اس کا نور اللہ بافواہہم محبت نا اللہ کے نور کو بجھانے کا کیا مطلب ہے غلط بیانی ہے پیدا کرنا غلط فہمیاں پیدا کرنا چھوٹی باتیں لوگوں میں پھیلانا اور جھوٹی تقریریں کار کے جھوٹے پروپیگنڈے خدا کے نور کو بجھانا فرمایا کہ وہ یہ چاہتے ہیں اپنے منہ میاں مٹھو بننا ہو اللہ انکار کر رہا ہے اس بات کا اللہ ہی حافظ ضرور پورا کر کے چھوڑے گا گلوکار ہلکا براؤن منفرد چاہے جتنا مرضی اس کا انکار کرتے رہیں اللہ کون ہے یہ خدا کا کام ہے سب اپنے کام پر یہی کچھ ہو رہا ہے میرے بھائی اب یہ مشابہت ہے ہو رہی ہے اپنی روزی کی خاطر ان کو کچھ نہیں ملتا کہ مولویوں کو پیچھے علاقے ختم نبوت کے اب یہ پروپیگنڈا شروع کر دیا اور جس کا سر پہ نہیں ہے وہ بڑے کے اندر کر دیا وہاں سے دیکھنے میں محبت کی بات نہیں کرنا بہت سے صحافی ہیں میں شریک ہونے کے باوجود باوجود اس کے کہ وہ بات کو سمجھتے ہیں جب بھی کوئی مسئلہ پیدا ہوتا ہے یہ اس کا یہ چھوٹا چھوڑ دیا جاتا ہے بارش کو اٹھایا جاتا ہے تو وہ سمجھتے ہیں کہ یہ سب ہے ہیں حقیقت کچھ نہیں ہے لیکن وہ بچارے مولویوں کو اپنا بنا بیٹھے ان کے سامنے لیکن کچھ ہیں جو بولتے ہیں بہت کم ہیں اور جو بولتے ہیں وہ پہلے وضاحت کرتے ہیں کہ دیکھو پر ایمان رکھتے ہیں ہم مسلمان ہیں ہم مدینہ یہ مرزا علیہ السلام کو نعوذباللہ جھوٹا مانتے ہیں لیکن ہم صرف ایک اے کے بھائی تم نے ان کو کافر قرار دیا اردو شاعری پاکستانی شہریوں کے حقوق تو دو اس بیوی کے پاس جانے کا گھر سے نکلنا مشکل ہو جاتا ہے یہاں تو اس بندے کے حقوق کے سرگرم ہوجاتے ہیں جو آندھیوں کے حقوق کی جگہ بات نہیں تو وہ جو بات کرتے ہیں وہ ان کے حال دیکھ لیں ان کو گھر سے نکلنے کا طریقہ پھر یہ میں نے کیا کریں اس نے کہا کہ ہم نے سنا اور تمام حقوق حاصل ہے کیا بات کر رہے ہیں یہ پتہ نہیں ہے کہ وہ کہتے ہیں تم دوسرے دیکھنے کو چوری کا کوئٹہ کا پروگرام نکاح کتنے کتنے کفن کے کپڑے ان کو بیان کرتے ہوئے انسان کو شرم آتی ہے اور پھر دوسرے لوگ معاشرے کے اندر پر آنا ہے یا کہ اس معاہدے کے نیو کے اوپر کیا مقدمات ہو رہے ہیں کلمہ پڑھنے کا مقدمہ نماز پڑھنے پر مقدمہ السلام علیکم کہنے پر مقدمہ اور کسی نے بیچارے اگر نکاح کے اوپر بسم اللہ الرحمن الرحیم کر اس کے اوپر بھی مقدمہ اور خدا کے رسول کا نام اور کوئی کام کرتا ہے تو اس کے درپے ہو جاتے اس پر مقدمہ بنا دیتے ہو اور پھر کہہ رہے ہو کہ میں تمام حقوق حاصل ہیں ماشاءاللہ کیا حقوق دے رہے ہیں آپ اور اس کے ایک سوشل میڈیا پر ایک مولوی صاحب آئے تھے کے دن اور اپنے چیلے چانٹے ساتھ ملا کے سوشل میڈیا کے بڑے فخر کے ساتھ بتا رہے ہیں آج ہم نے اس نے قادیانیوں کے گھروں سے قربانی کے جانور کی عمر ان کو کوئی حق نہیں ہے قربانی کرے یہ خبر بھی دی جا رہی ہے میں نے کہا تھا کہ بلوچستان میں امن و یہ مسلماں ہیں جنہیں دیکھ کے شرمائیں یہود کی مثال تو میں نے آپ کو انور کی مثال کے لیے ہندوستان میں کیا ہو رہا ہے ہوگا پر حملہ ہوا بے شک کہ نیٹو کے جو بھی تھا حضرت خلیفہ المسیح الرابع کے ابھی وہ پڑھنے والے اقبال جو ابھی موجود ہے اور موجودہ اس ابی جہاں کہیں بھی لیکن وہ آج کل کرتے ہیں اگر عوام کی طرف سے ظلم کے خلاف ہم اسلام کی تعلیم پر عمل کرنے والے لوگ ہیں ہم ذاتی مفادات دیکھنے والے لوگ نہیں ہیں ہو رہا ہے وہ انہوں نے بابری مسجد کا دی ہے ہم اس کی مذمت کرتے ہیں غلط کی ہے ظلم کی ہے اس نے انہوں نے لیکن سوال یہ ہے انہوں نے پہلی مرتبہ کرائی ہے غلطی ہے پاکستان میں کیا کر رہے ہیں آپ کے اندر جماعت احمدیہ کی مسجد بالکل قراردادیں خدا کا گھر برباد کر دیا اس کے اندر پھر دنیا کی مسجد کے اوپر حملہ کیا اس کے پر قبضہ کرنے کی کوشش کی گئی بہاولنگر میں مسجد کا ایک حصہ قرار دیا گیا دنوں کے اندر کہ دوسروں کے یعنی غیر وہ مصرعہ میں کیا کرتا ہے خدا کا نام لیتے تو سمندر کے اندر نا ان کو روک لیا ان سے چھین لی اور وہاں کا نمبر دار مسجد 84 سال پہلے ان کے پاس یہ بھی پاکستان نہیں بنا تھا تب سے یہ مقتدیوں کی ہے لیکن آپ مجھے یہ بتائیے کہ ٹھیک ہے بابری مسجد گرانے والوں نے ظلم کیا سیالکوٹ کی مسجد کے رہنے والوں نے کیا کیا دنیا کی مسجد پر حملہ کرنے والوں نے کیا کیا سننے والوں نے کیا کیا جہاں ظلم ہے وہ کریں گے تو پاکستان میں ہونے والے کریں گے آپ کی ادائیگی نہیں کر رہا تھا یہ کام آپ پتا نہیں کہاں سے جاکر لے آیا جو علاقے میں ہو علاقہ بدلنے سے ظلم کی تاریخ بدل نہیں جایا کرتی جو ظلم ہے وہ ظلم ہے اگر ہونے والی ہے تو پوری بات کیا کرو کوئی بات نہیں میں تو وہ ایشیا میں ہوگا تو ہوگا یہ ظلم کی نئی تعریف نہ کریں گے اور دوسری آخری بار کینٹ بجٹ کر لیا جائے گا جب رندوں نے کہا ہے ان بیچاروں کو پتہ ہی نہیں ہے کہ ہم بھی چندہ دیتے کیوں ہیں کس طرح دیتے ہیں بجٹ کیا ہوتا ہے بجٹ کی جماعت احمدیہ کے وضاحت کرنے کی کہ وہ چندہ کیوں دیتے ہیں ان کو اچھی طرح پتا ہے کہ ہم زندہ کیوں دیتے ہیں وہ پنجاب کہاں جا رہے ہو بجٹ کس طرح کریں اس کی تفصیل میں مجھے جانے کی ضرورت نہیں ہے اور میرے خیال میں اس لئے کی ضرورت نہیں ہے اگر میں ان بیچاروں کو اتنی بے چینی لگ جاتی ہے اس طرح اس تبدیلی سے لوگ سمجھتے ہیں پتہ نہیں پاکستان میں ملتی ہیں اس کی تفصیل میں جانے کی ضرورت نہیں ہے بجٹ کے حوالے سے سارے انبیاء جانتے ہیں کہ وہ زندہ کیوں دیتے ہیں اور کہا جا رہا ہے ہے اس تفصیل میں جانے کی ضرورت نہیں مجھے انہوں نے بھی اسی چیز کو اپنا رب بنا لیا ہے روزے کی خاطر ہر قسم کا جھوٹ بولنا اور غلط بیانی سے کام آپ ہم سے اتفاق نہیں لگتے عقیدے کا اختلاف ہے اپنی جگہ لیکن سمجھا کے اپنے خدا کے حضور اپنے پیش ہونا ہے وہ صحابی کا کیسے سامنا کرو گے جو صادق اور امین کہلاتی تھی کسی کو دکھانا کہ نہیں دیکھا نہ اس لئے کم از کم سچائی کا ساتھ دو اور اگر آپ کو سچائی کا نہیں پتہ کہ اس لڑائی کو تلاش کرنے کی علی شاہ صاحب جزاک اللہ بہت شکریہ آپ نے بہت مختصر جواب دیا ہے جو ضروری تھا تمام پیسے جو آپ نے بیان کیے انصافی کی تیاری کا اندازہ ہو سکتا ہے کہ ایک جماعت سیاست پاکستان جماعت نے بطور نمائندہ کے الیکٹرک کیا ہے وہ بیان دے رہے ہیں جو ٹویٹر بندہ پڑھ سکتا ہے تو اسے تفریح بھی تھے یہ باتیں بیان کی جاتی جو سیکھا بھی ہے اپنی بات کو کس طرح سے زندگی کی کوشش کی جاتی ہے آگے چلتے ہیں آپ سے سوال کر رہے ہیں خدا کے سامنے بھی ہیں اور اکثر آپ سے معذرت خواہ ہے کہ ہم نے انسانوں کو اپنے پروگرام میں شامل نہیں کر سکیں گے ہمارا بہت مختصر ہے لیکن یہ بات بیان کی جا رہی ہے کہ ہمیں آپ کے سامنے ان کی حقیقت رکھے اور یہ دیکھتے اکثر اینجو کے آنکھیں بھی ہیں لیکن ہو سکتا ہے کہ کچھ غیر جماعت لوگ ان باتوں سے متاثر ہوں اور ان کے لیے استعمال بتائیں کہ ان کے سامنے آئیں تو یہ ایک اور بات بھی ہے جو لکھا رحمت اللہ سے درخواست کرے گا لیکن آج بھی دماغ اب ایک اعتراض جو کیا جاتا ہے مسیحائی بھی کیا جاتا ہے اور جو دوست جو شخص کے متعلق کیا جو بھی اس متعلق اعتراض کرتے ہیں غیر ضروری فضول باتیں انداز سے اس کے بارے میں گفتگو کرتے ہیں دوبارہ ہر وقت ہو رہا ہے تو آپ سے درخواست ہے کہ اس کے لگا دیں جزاک اللہ طارق خان جیسا کہ ابھی ان کرم شاہ صاحب کے بیان کیا ہے اب ایک طبقہ جو کہہ رہا ہے کہ لندن سے کم ہو جانا ہے تجسس پروگرام کی طرح بھی سارا کر لیا انہوں نے کہا کہ نواز باللہ نظام الملک پیسے اکٹھے کرنے کا انتظام کر لیا ہے آپ ایسے پاکستان وہ اور بات کر رہے تھے کریم یار آیت یاد آ رہی ہے جس اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے بارے میں آپ کے  تک چلا جاتا دینے کا تعلق ہے نظام وصیتمخالفین کہتے تھے وعلیکم راونا کیا آپ کے خلاف کوئی اور کون ہے جو مدد کر کے پہلے میں کہتے تھے انگریز آپ کی پشت پنائی اب کہتے نہیں آپ غریب امداد دے کر رہے ہیں اور پاکستان میں ان کو خرچ کر رہے ہیں وہ جو ہے وہ کہہ رہا ہے پاکستان سے لے جا رہے ہیں انہوں نے پاکستان کو کاٹ لیا دوسرا گھر میں پاکستان سے جانے پیسے وہ کارٹون ملے ہیں کا تعلق ہے اگر ہمارے مخالفین نے قرآن کریم بڑا ہو تو قرآن کریم میں بہرحال اللہ تعالی نے خود مومنین کو خوشخبری سنائی ہے میں ابھی اصحاب رسول کی بات کر رہے تھے اس میں ایک آیت ہے اللہ فرماتا ہے ان اللہ اشتریٰ من المومنین والوں کے غلام رجنا ان مومنین کے اموال اور ان کے نفوس گلے میں گلے ہیں اللہ تعالیٰ ان کو جنت دے گا خرچ کرو میں تمہیں جنت ہوگا تجھے کہتے نہیں آپ نے جن نہیں لینی ورنہ اس طرح صاف میں اللہ تعالی نے اس باب میں باقاعدہ طور پر وسلم کی پیشگوئی ہے وہاں تجارت کا تذکرہ کیا ہے اللہ تعالیٰ فرماتا ہے کہ یا ایہا الذین آمنوا ھل ادلکم علی تجارۃ تنجیکم من عذاب الیم ایمان والو کیا میں تمہیں ایک ایسی تجارت کی خبر نہ دوں جو تمہیں عذاب الیم سے بچا لے گی فرمایا لائیو رسول ہے تو اللہ پر ایمان لاتے ہو اللہ ہو اللہ پر اللہ کے رسول پر ایمان لاؤ وقت وجاھدو فی سبیل اللہ باموالکم وانفسکم اللہ کے راستے میں اپنے نفوس وہ اپنے اعمال کے ساتھ سنا ہے خدا اللہ کہہ رہا ہے کہ لوگوں کو جنت لے لو اللہ کی راہ میں مال خرچ کرو اپنے نفوس خرچ کرو اللہ تمہیں جنت دے گا ہمارا بہشت ہمارا نہ ہوتا اعتراض اور طرح ہوتا ہے صحیح مسلم میں امی نے پہلے جیسے بیس کی پاکستان وہ اس کی طرف اشارہ کیا تھا حضرت رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے امام مہدی اور مسیح موعود کی ایک نشانی یہ بیان کی ہے کہ یہ دے سونگ راجہ دل جانم نے والا مزید تو آنا کیا جنات جنت میں ہونے والے درجات ملنے والے درجات کا بیان کرے گا السلام نے جب نظامنفسیاتی و کیا بتایا کہ اللہ کی راہ میں خرچ کرنے والے اللہ کا قرب پاتے ہیں اس نظام میں شامل ہوتا ہے وہ اس نظام میں شامل ہوں کہ اللہ کا قرب پانے والا ہے آمد اپنے جان مال سب کچھ بادشاہ طارق صاحب جانباز کا نوٹس لینے کو ہی کرتے کہتے دیکھیں ایک کا نام رکھا ہے آپ نے وہ ہے ایسا کمرہ ایسا قبرستان جہاں بہشتی آپ کے بقول بہترین ہے اس کے مقابل کیا ہوگا اور سب جہنمی اگر ان کے اس قاعدے کو مان لیا جائے اس میں لکھا ہے سب جانتے ہیں کہ حضور شہزاد میں جنت البقیع بنا ہے اللہ جنت البقیع کے علاوہ جو ساری مسلم مدفون ہے وہ سارے نورجہان میں ہیں اس نے پاکستان کی بات چل رہی ہے تو پاکستان میں ہر دوسرے تیسرے مزار کہاں سے زیادہ بنایا ہوتا ہے اس میں سے گزرے تو وہ کیا تو کیا اس کے علاوہ جتنے دنوں سے لوگوں میں گزرتے ہو سارے دوست ہو جاتے ہیں اللہ تعالی نے جو بیان کیا ہے جیسا صاحب میں احمد رسول آنے والے احمد نبی کے ہم تمہیں ایسی تجارت کی خبر دیتا ہوں جو تمہیں جنت میں لے جانے والی ہے وہ کیا ہے کہ تجاہدون فی سبیل اللہ علیہ و آلہ وسلم کہ تم اللہ کی راہ میں اپنے مال سے جہاد کرو گے اپنے نفوس کے ذریعے جہاد کرو گے جو توبہ میں کہا کہ ان اللہ اشتریٰ من المؤمنین انفسھم واموالھم بان لھم الجنۃ اس کے ذریعے جنت کا وعدہ دیا ہے اور تمہارے لئے کوئی تجارت کی ہے ہم اپنے دل سے خوشی سے اپنے اعمال خدا کی راہ میں خرچ کرتے ہیں اور اسلامی تعلیم کے مطابق کی وجہ سے سعد بن ابی وقاص نے کہا یہ نسبت دینے کے لیے تیار ہوں تو حضور نے کہا تھا کہ زیادہ سے زیادہ آپ ایک بڑا تیرا قصیدہ ہم بھی حضور صل وسلم کی حدیث کے موافق زیادہ سے 13 تفسیر کرتے ہیں ہم جذبے سے محبت سے اسے خرچ کرتے ہیں ان کو مجبوری نہیں ہے اللہ تعالی کا فضل ہے کہ میں اللہ نے انڈین وال کرنے کی لوگوں کو صرف اعتراض کرنے کی دیکھتے ہیں کون راہ خدا والا ہے کارزین برنامہ دکن نبی صلی وسلم کے منافقین جو ہے تیرے پاس اکادمی لگاتے ہیں تم اس قسم کے الزامات لگاتے رہتے ہیں تو یہ ان کا الزام لگانا ہمیں بتاتا ہے کہ ہم کس جگہ پے ہیں وہ کس جگہ پر حضور نے فرمایا تھا کہ آپ میری مدد جب صادق امام ہوں گے سچے ہوں گے نیا میرا حساب ہوگا جو میرے ساتھ میں صحابہ کے ساتھ سلوک ہوگا ان کا کرم ہوگا ہم اپنے مال خرچ کرتے ہیں کیسے قرآن کریم نے کہا سے الزام لگاتے ہیں اور بغیر کسی تحقیق کے بغیر کسی ثبوت کے حمزہ صاحب جزاک اللہ بہت شکریہ جیسا کہ آپ کہ ان الزامات کے کوئی بھی حقیقت نہیں ہے جماعت این جی کی تاریخ گواہ ہے ایک سو تیس سال جماعت احمدیہ کے اس بات کے گواہ ہے کہ وہ دکھاتی ہے کہ جب کے خلاف مخالفین نے سات سے کی کوشش تو اللہ تعالی نے انہیں کی ان کوششوں کے گلے کا طوق بنا کر انہیں کے لئے ایک کس کے سامان پیدا کیے جماعت احمدیہ دن دونی رات چوگنی ترقی کی راہوں پر آگے بھی رمضان اور گزرتی رہی ہیں اللہ تعالی کے فضل سے ہمارے پاس وہ تحفہ ہے وہ نام ہے جس کا وعدہ قرآن مجید میں جو خلافت ہے اس خلافت کی رہنمائی میں مصالحت کے تحت جماعت احمدیہ آج دنیا کے 200 سے زائد سالہ مالک میں آ جائے انجام دے رہی ہے اور اسلام کی ترقی کے لئے پوری طرح سے کوشاں ہے اور اپنا سب کچھ قربان کرنے کے لیے تیار ہے تو ایسی کوششیں ایسی باتیں ایسی ہوتی ہیں کہ جب کبھی بھی بھلائی جمع تین آگے بڑھتی ہیں تو آپ نے جو شرکاء ہیں ان کا بہت شکریہ ادا کرتا ہے جزاکم اللہ نظر نہ کر بہت خوش ہوں تو جیسا کہ شروع میں بھی عرض کیا کہ آپ کے خیالات آپس میں یہاں پر ہیں تو انشاءاللہ آگے مقابلہ تو انشاءاللہ ان کے جوابات بھی آپ کو دیں گے تو اس پروگرام کے ساتھ یا جن سے آپ کی خدمت میں پیش کی جانے والی سیریز کا اختتام ہو جاتا ہے تو انشاء اللہ آپ کے لئے بول رہا ہے خدا کے گھر سے نظروں کا دل دکھایا جائے گا تو ہمیں اس کے ساتھ آپ سے زیادہ چاہتے ہیں جزاک اللہ اسلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ

 32 total views,  2 views today

Leave a Reply

%d bloggers like this: