Friday Sermon – Khalifa IV – 20-07-1984




Friday Sermon – Khalifa IV – 20-07-1984

خطبہ جمعہ خلیفۃ المسیح الخامس مرزا طاہر احمد

اللہ اکبر اللہ اکبر لا الہ ارشاد مولا علی مولا علی مولا لا سہارا اردو نیوز ارشاد ارشاد السلام علیکم امام علی علیہ السلام اعلیٰ حضرت مہا اللہ اکبر اللہ اکبر اشرف العلوم محمد حسن حماد اللہ طالب بسم اللہ الرحمٰن الرحیم الحمد اللہ رب العالمین ہنس رہا مصطفی نام تعلیم حال ہے مال ولا تقولوا نعت نہ والا دن کولوں تمنا مولانا علامہ علی اکبر یمان کی حکومتالعقود بی بی بی بی میں احمدیوں کے خلاف صاف ہونے میں جاری کیا ہے کہ شہریوں کی استعمال کیا ہے کہ قادیانیوں کو غیر مسلم سرگرمیوں کے خلاف وہی سرگرمیوں سے باز رکھا جاسکے کے لغوی معنی کیا ہیں ہیں مسلم اگر کوئی اذان دے گا تو یہ غیر مسلم کرنے کے لئے اس لیے صرف غیر مسلموں کو غیر مسلم سرگرمیوں کی اجازت نہیں دی جا سکتی اور مسلمانوں کو غیر مسلم مسجد میں جاتے دوسری ریسرچ میں یہ بتائی گئی ہے کہ وہ اپنے آپ کو مسلمان کہتے ہیں تو مسلمان کہنا ایک بہت بڑی رقم بن گئی اور کیونکہ یہ غیرت گرمی ہے اس لئے نتیجہ یہ نکلتا ہے کہ غیر مسلموں کو اس غیر مسلم سرگرمی کی اجازت نہیں دیا اور مسلمانوں کو غیر مسلح کرنے کی اجازت ہے اے ٹھیک نہیں آتی ہے اس کے متعلق تو میں کچھ مزید نہیں کہا جاتا ہے کہ جب تک جماعت کی طرف سے تمام اٹھایا گیا ہے ہے اس معاہدے کے رو سے وائٹ پیپر کہا جاتا ہے یا نہیں اگر ہے تو پھر تو کوئی بات نہیں نہیں باوجود اس کے کہ اس نے شادی بھی لائق کام دیا گیا ہے ہے جس سے مجھے خوشی ہے کہ کچھ بولیں تو سہی میں نے لیکن بولی اس طرح ہے ہے ایک طرف حضرت مسیح موعود علیہ السلام کی کتب سے نکالے ہیں ہیں کسی اور موقع پر کسی اور کے لئے استعمال ہوئی ہیں کچھ اور رکھتے ہیں ہیں اور ان کے نزدیک ان کو اس میں مسلمانوں کو اور دوسری طرف طرف کو حاصل کرلی ہیں وہ ہمارے اور ان کی اشاعت کی اجازت ہے گویا کہ یہ تصویر شیئر کرے گا کہ دیکھو یہ ہماری دل آزاری ہوئی ہے تو جا ہی نہیں نہیں اور اپنی کتاب کو دیکھ کر یہ معلوم کرنے کا موقع کسی کو فکر نہیں آئے گا کہ نہیں تو پھر میں ہمارا کیا ہے کہ سنگ و خشت مقید ہیں اور سگ آزاد چلو مان لیا گیا ہے اور کتوں کو آزاد کر دیا گیا ہے دل آزاری کر دیا گیا ہے اور جوابی کاروائی کو بند کر دیا جائےلیکن جہاں تک میرا تعلق ہے ہے اس کے ساتھ اس کا موقع صبح کہلائے گا کہاں پر پاکستان کا قانون بچیوں کی زبان بندی کرے گا دنیا اور بھی ہے وہاں پہنچ سکتی ہے اٹھے گی بیلی نی آیا ہے اس سے زیادہ وقت کے ساتھ ہیں انشاء اللہ تعالی اس کے نکتہ بہ نکتہ جوابات یاد کرکے تقسیم کئے گئے گئے تو میں آپ کو بعد میں بھی بیان کروں گا جوگنی پڑھنے کا موقع مل کر نہیں آتا اور دونوں سنتے ہیں ان تک پہنچ جائے اور اس کو اپنے ہاں نہیں کچھ اختیار انہیں تھا پہنچا رہی ہے کچھ کھلا نہیں گئے دنیا کا تعلق ہے ہے ان کے سامنے سے جو نے موقف اختیار کیے ہیں وہ بھی میں کل جہان ہوتی ہیں اور re دھرنے میں یہ بات پیش کی کی کہ وہ مسلمانوں کا ویزا ورکر بدل کر مسلمانوں کا نمائندہ ہوتا ہے وہ لوگوں کو دکھا دیں تو مسلمان کا فرض ہے کہ دھوکے بازوں کو پکڑے گئے ہیں اور ان کے خلاف کارروائی کرے یہ ایک منطقی دلیل قائم کی ہے دنیا کے لئے کوئی نہیں ہے کہ فقط میں ہی نہیں ان پر رکھنی ہیں کہ ہماری حکومت میں فیصلہ کر لیا اور ایک حوالہ دیا گیا ہے اس لیے میں پایا جاتا ہے زندگی میں انقلاب آیا کہ فلاں جماعت رحمت ہے تو اس پر کروانا تھا یہ بات پہنچا دی سکتا شریف انسان بنانے کے لئے ہوتے ہیں وہ لوگوں کے متعلق بنائی گئی یہ سب کو کہتے ہیں اس لئے حکومت موتیے کی نئی حکومت کی سم کو ختم کرنے پر پابندی ہم نے جن کا یہ حال ہے ہے انہوں نے فرماتے ہیں کہ قانون پاس کیا تھا شریف اور اس کی شرعی حیثیت ہے کیونکہ تم نے اس میں سارے ملک نواز یہ اعلان کیا کہ جماعت احمدیہ ہے ہم تو اسمبلی کے پابند ہیں یہ راز نہ اس کے بعد تو بند ہو جائیں گے تجھ پہ کواور مزید بات یہ کہ اس کے اس فیصلے کی حالت میں ہے کہ سارا قانون کی بڑی محنت سے تیار کیا تھا اور دوسرے کسی بھی صورت میں ملک کو دیا تھا وہ موسم اور تمیم کی عزت افزائی ہو رہی ہے دکان تو موت ہے اور پھر کی یعنی آخر کچھ تو احترام آ جائے یہ تو بات بنتی ہے کہ ایک عورت صبح اٹھ کے کھا رہی تھی تاریخ سے افطاری کے بعد ہی پتہ تھا کہ روزہ نہیں رہتی نہیں نہیں ہے آدھی رات کو دیکھنا چاہتی ہوں اردو گانا کھانے والا ہے وہ تو مجھے پورا کرنے کے لیے یہاں کلک کریں تھوڑی کے لائق نہیں اور یہ ڈاکو اور پھر ایک اور دھوکہ مبارک ہو ماترم کے معطر تھا اور اس کے لیے دوبارہ مل جائے گی ایک شخص کا فیصلہ ہے ہے ہماری بات ہوگی جب ہم ہوگیا اور میں نے بھی ایک ماہ ہو گی دوبارہ جاری کیا گیا میں تو پھر آپ اس کی قانونی شکل دے دی ہے کہ ایک سبق ہے پر دیکھ سکتے ہیں سب سے پہلے تو یہ کہ منافق ہے کہ توحید قرآن و حدیث کی بات کرتے ہو تو اس کی مدد کرو اور اس کو کس چیز کی اجازت دی جاسکتی ہے کہ کیوں نہیں جاتا تو یہ فیصلہ کے کسی کے دل میں کیا ہے وہ کرتا ہے اس لیے آپ کو چاہیے کہ نہیں نہیں یہ نہیں کہہ سکتے کہ جو منہ سے کہہ رہے ہیں ہے ہم حرام کہتے ہیں کہ تمہارے دل میں یہ نہیں نہیں یہ کام کب آئیں خدا کے اور کوئی نہیں کر سکتا آپ کو مسلمان کہا حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے دیا اور ایسا واقعہ ہے جہاں تک قرآن کا مطالعہ کرتے ہیں کہ قرآن کا موضوع کیا فرماتا ہے جو ہے میں آپ کے پردے سنائی تھی اس کا جواب مجھے لگتا ہے کہ کسی کو نہیں کوئی مستقبل نہیں ہے اور قرآن کریم میں موجود ہیں کیا گیا اور ہم تمہیں بتا رہے ہیں دل پر لگا تم ہرگز نہیں لایا ہے نہیہ کہنے کے باوجود کہ فلاں نے مجھے خبر دی ہے کہ تم ایمان نہیں لایا یا پیدا ہو جائے کہ آپ شاید وہ مسلمان نہیں کہہ سکتے اپنے آپ کو کوئی بتا دو اسلام ہی کہتا ہوں پاکستان ہو کہ ہم یار ہیں تمہارے ابھی تو ہو سکتا ہے جس کے متعلق داخل ہونے کی دعا اور آپ نے سب سے برگزیدہ رسول کو خود بتایا اور یقین کو اطلاع دے رہا کہا کہ یہ لوگ جو زیادہ کرتے ہیں کہ ہم مومن ہیں ہیں ان کے دلوں میں ایمان نے جھانک کے دن لیکن ساتھ ہی یہ حکم دیتا ہے ہے کہ مسلمان کہلانے کا حق کس نے چھینا بلکہ اپنی زبان سے عوامی علم ہے امام حاصل نہیں ہوا اندازہ ہی نہیں پھر بھی خوش آمدید کہتا ہے کہ مسلمانوں کو جہاں تک یہ دعویٰ تھا کہ رہے ہیں اس لیے ہم نے ان کو روکا ہے اس کو کیا کر رہی ہے آیا نہیں کہ ان کے زمانے میں میں صحابہ کے گناہوں کی بڑی تعداد میں المنافقون ہوئے اور جگا آج دن کو پتہ چلا کہ منافقین سے کیا کرنا چاہیے اور ایک منافق ہوگی زبردستی غیرمسلم کہنے لگے وہ جو دل آزاری میں اس حد تک بڑھ گیا کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی ایک غزل سے واپسی پر اس نے یہ اعلان کیا کیا کہ جو مدینہ شہر کا سب سے معذرت چاہتا ہوں وہ ملتا ہے اس شہر کے سب سے ذہین شخص کو نکال دیا آپ جانتے تھے کہ وہ کیا کہہ رہا ہے ہے چنانچہ اس کو ان کے خون میں جوش پیدا ہوا کہ انتہائی کے اوپر گھر کہ ان کی دعائیں دینا اتنی خوفناک جرم کا کا مرتکب ہو گیا وہ انسان کو دنیا کا سب سے ذہین تھا کہ رہا اور حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم فرمایا بلکہ جب اس کا بیٹا ہونا کرمیں تمہیں نہیں دوں گا ٹھیک ہے جب تک یہ اعلان نہ کرو کہ تم دنیا کے ذریعے انسان اور محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ محبت کا کیا اور پھر اس کو مدینے میں اپنے آپ کو مسلمان کہتا رہا اور اور پاکستان کے بارے میں پتہ نہیں پتہ نہیں ٹھیک ہے کیا کر رہے ہو تم کیسے ہو کون کرے گا کا فیصلہ تو اللہ کے سوا کوئی نہیں اور یہی وجہ ہے کہ جب میں فیصلہ کرنا تب بھی تمہارا کام نہیں ہے ہے کہ زبردستی کرو کہ میرا کام ہے عامر فرمائیں اسلامی ملک میں رہ رہے ہیں اور وہ اپنے آپ کو مسلمان بنا رہے ہیں اور دنیا کو دھوکہ دیا یقین منافق کہ جن کی مدد کو نہیں آئے گی یا نہیں یہ لوگ کیوں نہیں کرتے ہیں اور ان سے یہ سلوک کیا جا رہا ہے ہے لیکن ہی نہیں ہے کیا ہے ہے کرنے کے لئے بلکہ منافقت پیدا کرنے کے لیے قانون جاری کیا جائے جو اپنے آپ کو مسلمان سمجھتا ہے اور یہی ہے ہے کچھ کر رہا ہے یہ منافقت ہے یا وہ منافق ہے ہے کہ تم ان کو بھی جھوٹا کھا لیا ہے لیکن اپنے آپ کو مسلمان سمجھ رہے ہیں جو اپنے آپ کو مسلمان کہتا ہے ہے اس کو کوئی دوسرا جو مرضی سمجھو مجھے ہر کی پٹا ئی یا تو دوسرے نے قیامت کے دن رہتا ہوں مسلمان سمجھتا اس کے ہیں توحید باری تعالیٰ کا ہے کا ہے ہے ہے کمال کرتا ہے اسلام میں فرقے بنائے بھائی پرانی فلم کی حقانیت کا قائل ہوں اور یہ یقین رکھتا ہوں کہ نماز روزہ حج زکات کار فرائض ہیں یہ قانون کہے گااس لیے غیر مسلم ہونے کا اعلان کرو اور غیر مسلم نکاح ہونے کا اعلان ان ساری چیزوں کا بہت مشکل کو آسان فرمائے کہے گا کہ خدا کو واحد تسلیم کرتے ہوئے بھی کہو کہ میں کوئی شک نہیں اللہ علیہ وسلم کو پہچانتے ہوئے ان کو کتاب اور معجزے پر عمل کرتے ہوئے جھوٹی ہے یہ کام نہیں نہیں اور یہ اعلان کرو کہ یوم حشر نشر سب کہانیاں اور کہتے ہیں اور اس کا گدھا کون ہیں یہ اعلان کرو ورنہ عدالت میں سزا دے گا یہ ہے وہ منافق دور کرنے کا علاج ہے جو اس کا نام کیا ہے کی بات ہے کہ منافق وہ ہے یہ منافق ہونی کے قانون مجبور کر کے یہ باتیں کہہ رہا ہوں پھر میں میں جلدی ہے کیسی ہے پر عمل کرنے دیں تو میں تمہارا تعلق نہیں رشتہ کیا جواب دیں گے ہم نے تمہیں میسج کیا تو اس کے لئے ان کی یہ پرانی تعلیم ہے کہہ رہا ہے ہے انسان کی نہیں نہیں ہوئے منافق ہوتے ہوئے اگر تم ایک نہ اچھا عمل کروں بتاؤ کا مطلب کیا ہے کرنے کی دعوت دے رہا ہے ہے فرمایا ہے کہ منافق ہو اور ساتھ دعوت نہیں بلکہ کو کون دے رہا ہے پتہ نہیں لگ رہا ہے کہ آپ ان سے فائدہ اٹھاؤ اور یہ کتاب کسی کے ساتھ نہیں ہے تمام جہانوں کے لئے مومنوں کے لئے میرا مطلب ہے اور وہ اس کے لئے بھی امت کو گمراہ نہ کریں ان کو پتہ چلا کہ تم بھی میرے پاس نہیں ہے جھوٹ کے باوجود وہ بھی زندگی کے بعد ہمیں بتاتے ہیں کہ قرآن پر عمل کرو گے اور نیک اعمال کرو گے اللہ آپ کو جزائے خیر دے اور یہاں کیسے نکالا جاتا ہے کیونکہ ہم نے تمہیں منافق قرار دے دیا کہ برا نہیں کرنا بالکل کرتے ہیں کہ ہماری ہے کربلا اور ہم اپنی شناخت کے گلے میں ہار کے نہ بنے گا قرآن کریم کے اوپر ایک جھوٹا الزام لگا کر کہ قرآنی تعلیم دیں گے نفرت ہے ہے ساری دنیا میں قرآن کریم کو بد نام کرنا اور اپنی حاضری کے لئے بنانے کے لئے جاتا ہوں اور جو ان عملے اور ان کی طرف منسوب کرکے وہ بات کیوں کرتے ہو یہ کیا ہو رہا ہےقابل تو تمہاری کوئی نہیں منافق ہوتا ہے جو جھوٹ بول کر اپنے عقیدے کے خلاف بات کرتا ہوں میں تو کہتے ہیں تم کرو اس سے بچانے والا قانون ہے منافق بنانے والا گانا اور عمل اس قانون کے تحت بننے احمدیوں کے سوا ہر قسم کے خیالات کے لوگ لوگ ہوتے ہیں دیکھیے جھوٹ بولتے ہو جن میں کچھ اور ہے اوپر سے کچھ کہتے ہو اور مجھے یقین ہے کہ نہیں اسلام میں داخل ہونے کی شرط نے حضرت مسیح موعود علیہ السلام کا انکار نہ کرو نوکری چھوڑ دیں گے جائیداد سے محروم ہوجائیں گے اپنے سارے کو قتل کروا رہے ہیں لیکن دل سے جانتے ہیں کہ بھائی نے کتنے بچے ہیں تکلیف برداشت کر لیں گے یہ جھوٹ نہیں بولتے یہ ہوتا ہے ہے کہ ہر قسم کے لوگوں کو آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر دیکھیں اور جھوٹ نہ بولے تو اپنا عمل ل کر بتا رہا ہے کہ ہم نہیں ہے بلکہ کوئی اور ہے ہے اور وہی ہے جس کو بلاک کر دیا کریں کہ تمنا اس بہانے ادھر میں میں جمع کرنے سے پہلے ہے ہے کہا یہ جا رہا ہے کہ امت سوسائٹی کو دھوکہ دے رہے ہیں اور اس طرح عوام تک پہنچایا ہے یہ سمجھ کر کہ یہی مسلمان ہیں وہ ان ہوٹل ہے ہے کہ جس کے لئے فیصلہ ہو جس طرح کی زندگی میں وہ غیر مسلم ہے دھوکہ دیتے ہیں ہیں ہیں ہیں یا تو وہ غیر اہم بھی بند کر اپنے اندر شامل کرتے ہیں پھر تو ٹھیک ہے بند کریں گے تو پھر سہی اور پھر دھو کر کہتے ہو گیا جب کہ احمدی ہونے کے نتیجے یہ ہے کہ جب بھی کوئی نبی ہوتا ہے پاکستان میں کیا جاتا ہے ہے کہ اس کے نتیجے میں دو باتیں کبھی دینے کے طور پر سامنے آئے اب یہ جماعت دینے والی میں میں دھوکہ دینے والا سزا دیتا ہے اس میں ملے گا تمہیں نوکری ملے گی تیری قیدوں ہونے کے ساتھ ہی ہمارے گھر سے نکال رہے ہیں وہ روٹھ کر میکے جا کے بیٹھ گئے ہیں قیامت برپا ہو جائے شہر میں یہاں موجود تھا وہاں پر یہ انسان بن جائے تو معلوم کر دیں میں اتنا مارے ہیں دکھا کے بعد چھوٹے بھائی اٹھ کر گالیاں دے اور وہ بچپن کے واقعات پاکستان میں ہو رہے ہیں ہیں یہ کہا جا رہا ہے کہ دھوکہ دے گا لوگوں کو پتہ چل کر دھوکہ جو تم کرتے ہو ہو کہ وہ دو چار ہوتا جو ہیں ان کے لیے دیکھتی ہیں ان کے گھروں میں ہاتھ ڈالے جاتے ہیں ان کے لیے گیٹ بنتے ہیں اور دو چار دن ثابت ہوتی ہو اس کو دھوکا کھا جاتا ہے یہ ہے کہ جو آنے والا ہے وہاں پہ نہیں نہ رہا ہے نہ ہونے والا منافق جھوٹ کی خاطر ہوئے برباد کیپاگل پن بادلوں کو تو نصیب ہوتا ہوگا لیکن آپ مجھے دیکھ لو میں نہیں آتا اگر یہ کہا جائے کہ قرآن کو تقسیم ہوں گے مٹھائیاں کے لے جائیں اور گلے میں ہار ڈالے جائیں گے پھر بھی چھوڑ کے دعویدار تو ہے لیکن جہاں تک نہیں ہو گا کام ہوئی وہ تو کہتا ہے کہ اے جن احمدیت کی سچائی کے لئے تو خدا نے بنا دیا ہے اور ان ہی کے ہاتھوں سے بنائی ہے جو صاف کہہ رہے ہیں اور جھوٹ جانا تو نہیں بنائی اور یہ وہی ہے جو ہر نبی کے وقت پڑھی جاتی ہے اور نبوت کی صداقت پہ نشانہ غلام رسول اللہ کے ہیں اور کہتے ہیں اللہ نے بار بار فرمایا کیا نام ہے اور اس کے بعد ایک کے بعد دوسرے کی کتابیں اپلوڈ کیا گیا کیا ناممکن تھا کہ اس جماعت کو نا جب تک آج میں سے پیار ہو جاتا ہے کانٹوں پر چلنا پڑتا تھا مولانا ثاقب رضا پھر بھی مسکراتے ہوئے مزید قریب ہو کے پڑھنا ہے ہے بھائی کوئی امتحان ہوگا جو ایسے شخص کو مناسب لگے یہ عقل کے پیمانے بدل جائے کیسے تبدیل ہوجائے ٹھیک ہے جو مرضی کو کہ ہم دنیا کے بتا دیں کیسا پاگل پاگل کہلائے جا سکتے ہیں پتہ چلتا ہے کہ بڑے لوگوں نے کیسے بچانی حاضر کے مسلمان کہلانے کا حق کے لیے جو بھی آ رہا ہے کیا ہو رہا ہے وہ جانتا ہے کہ اس سے کیا ہوگا مجھے غیر مسلم کہا جائے گا اس سے نکالا جائے گا مارا جائے گا کیونکہ دی جائیں معاف کرنے کا طریقہ کیا حال ہے اور کہاں ہے کرتے ہیں تمام امت مسلمہ کے نام سے اس قانون کے نتیجے میں بلڈ پریشر کیا ہے تو اپنی سچائی کی وجہ سے جو کہ فلاں کے قائل ہیں وہ کرتے ہیں پتہ ہے میری جان دینی ہے تو آتی ہیں لیکن مجموعی طور پر ان کا ذکر اس لیے وہ کسی صورت میں ہےدل لگی ہزار پاکستان میں احمدیوں کے سوا سارے مسلمان پیدا ہوئے ہیں ہیں ان میں دنیا کو ہی لمحے کون انکار کر سکتا ہے بات کا تو نمی دہند وہ سارے کے سارے مسلمان جھوٹ بول کر کہ جو عدالتوں میں جھوٹی گواہی دینے کا عادی ہوں کے لئے کو نظر انداز کرنے کا عادی ہوں وہ تو منافق ہے ہے اور جب سے غیر منافق قرار نہیں دیے جائیں گے جب تک جھوٹ بول کر ہمارے اندر موجود ہو تے ہیں ان کا کوئی حق ہے اور فرماتے ہیں کہ تم مسلمان ہو تم مسلمان ہو تو مجھے بتانا نقشہ لیے ایک شریعت کا ہوگا پاکستان تمہیں یقین ہیں کہ خدا کے کام ہے اللہ بہتر جانتا ہے کون مسلمان ہے کون نہیں ہے وہ کہہ رہے ہیں ان کا جائزہ لوں گا کوئی حقیقت میں اسلام کا یہی ہے کہ نہیں کہ جس طرح کیوں نہیں جو بلا کا مذاق اڑاتے تھے آج پاکستان کے شہروں میں رہنے والوں میں میں پڑھا رہے ہیں اور نے بنایا اس قانون کی زد میں وہ نہیں آتا ہے مسلمانوں کے کسی پر حملہ تھا جھوٹ بولنے کی عادت نہیں مجھ سے بات کر باقی نام کا تعلق ہے دوسرے علاقے کے ہے جمع کروا دیا جائے گا میرا ارادہ ہے ان شاء اللہ کر دیا ہے انہیں یہ ان میں ترجمہ کروا کر سکتی ہے گئے مسلمانوں انہیں مسلمان کہتے ہیں نہ اس لئے میں گھر کے حوالے اور بات ہے فرمائے ہے ہےکافر میں تمہارے لئے ہے کہ پھر حقیقت تک اس مدد کی کہ مانتا نہیں بہت پیاری ہے وفات پائے گا جزاک اللہ کے حضور حاضر ہوں گا اس کے عوام الناس کو پتا ہے یا اس کے بعد ایک وقت بتا رہے ہیں مسلمان ہے پاکستان میں میں ان کے متعلق ہم نے ہم پر یہ پابندی ہے کہ ان کو تبدیل نہیں کر سکتے حالانکہ صحیح کہتے ہیں تو دو دھاری تلوار ہوتی ہے ایک بندہ کوئی نہیں جانتا ہوں پاکستان کے پولیس کے حوالے کیا ہے واقعہ یہ ہے کہ ان پر بھی پابندی عائد ہوگئی ہے کیوں نہیں چلی تو پھر سے شکل ملتی ہے مجھے پاکستان کا یہ فیصلہ ہوگیا اگر کریں کریں تو انہوں نے نہایت خوشی سے طبیعت صحیح نہیں ہے ہے سمجھ آیا نہ آیا بات کرتے چلے گئے ہو جواب نہیں دیتے یہ کیا تم مجھ سے محبت نہیں کرتے تھے تو دو گھروں میں میں ایک دنیا کا کوئی فرد ہے آپ کے تحت کے باہر نہیں رہا نہ قرآن میں اجازت دے دی کسی کو چھوڑ دو یو کے پاس نہیں گئی اٹھا کر ماں تک لے گئی شریعت ہے اور اگر کرنی ہے تو پھر یہ نمبر کہاں سے نکالیں گے تم بولی وہی بولے ہم لوگ پیار سے سنتے ہیں بلکہ ایسے بھی تھے جو آ کر نہیں گستاخی کرنے کا طریقہ بتا دیتا ہے ہے ہے نہ پڑھنا کہاں ہے سامان نکال رہے ہیں اور پھر یہ ہیں اگر چلی جائے گی تو جواب کی اور نہ ہی نہیں کیا کریں کریں یہی وہ فرماتا ہے انسان کو مرے یہ کیا ہوگیا ہے کہاں پہنچ گئے ہو ہر بات کو تم ہی الٹ کر دیا ہے ہر دن تین بجے سے محروم رہے ہیں اور یہ نہیں ہو رہا تمہیں کہاں پہنچا دے گی تو میں یہ مانتا کتنے کیلے جانا ہے ہے آپ پر یہ ہے ہماری ہے تمہیں جواب دے دیا جائے یہ قرآن سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ پاک کی کی حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلمیہ مکمل سنو کہ بتا رہی ہیں کہ کون سچا ہے اور کون ہوتا ہے ہے اپنے محبوب لائن ہمارے اگر ہم چاہتے ہیں تو آپ کو بہت پسند ہے میرے نبی دیا تھا لیکن اگر نہیں مانتے اور لازمی جگر کا فیصلہ کر لیا ہے تو پھر ان کو محفوظ رکھے پیش کر دیں گے جہاں ہوئے سے جواب اس لیے این جی کا فرمان ہے کہ آزادی طور پر تیار ہو جائے اور پھر سے جرمانہ کیا جائے تو اس میں بھی بھرپور ہوتا ہے میں حضرت موسی علیہ السلام کے خلاف کریں تو نہیں بن سکتے تو ضرورت ہے تو پھر ایک جواب صاحب یہ شعر کہنے لگے اللہ محمد اعظم کے لیے بہت دعا کریں پر مائل کر دیتا ہے لیکن جھوٹ ہے ان کے ساتھ ظلم کیا گیا ہے کہ اسلام کے نام پر خون نکلوانے کے لیے قدر ظالم ہے عجب ہے کہ ان کو کوئی نہ کوئی سندیس پابندی نہیںاور انتہائی گندی مغل کے موقع پر ان کے خلاف اور ان کے والدین کے خلاف جو گندی گاڑی کو دی جا سکتی ہے امریکی اور پھر خاموشی رہی اور مجھے پینٹ کی گئی کریں ان لوگوں سے بات کرتا ہے اسلام کو اٹامک انرجی کمیشن کر دیں کہ حکومت کو ہدایت دے اور آباد رکھے یہ معاملہ پر چوکا ہے جس کے بعد پھر گناہ کی طرف سے تحائف کے ایسی قوموں کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ہے پھر واپس نہیں ملتے نظر نہیں آرہے ہیں لیکن جواب نہیں دے رہی ہمارا ہے ہمارا ہے اکبر

 58 total views,  2 views today

Leave a Reply

%d bloggers like this: