حضرت مسیح موعودؑ کی دعوی سے پہلے کی زندگی




حضرت مسیح موعودؑ کی دعوی سے پہلے کی زندگی

Streamed live on Aug 25, 2021

اعوذ باللہ من شیطان الرجیم بسم اللہ الرحمن الرحیم ایم اس امام کے ایک اور پروگرام کے ساتھ خاکساران عمل آپ کی خدمت میں حاضر ہے ہے یہ پروگرام نام ہم آپ کی خدمت میں جماعت انڈیا کی جو فحش ویب سائٹ ہے اسلام آباد اور اس کے تعاون سے پیش کرتے ہیں اس کا مقصد یہ ہے کہ آپ کے اسلام کے متعلق اور احمدیت کے متعلق جو بنیادی قسم کے سوالات ہوں ان کے جوابات دیے جائیں آئے جو مال باقاعدگی سے سننے اور دیکھنے والے ہیں وہ جانتے ہیں کہ اس پروگرام کے عموما دو حصے ہوتے ہیں پروگرام کے پہلے حصے میں ہم اسی موضوع کو لے کر گفتگو کا آغاز کرتے ہیں لیکن پہلے دس سے پندرہ منٹ دوسرے کے متعلق گفتگو ہوتی ہے اور پھر پروگرام کے آخری حصے میں آپ کی جولائی سوالہ تارے ہوتے ہیں یوٹیوب کے ذریعے سے ٹویٹر کے ذریعے سے اس عمل کو لیتے ہیں اور ان کے جوابات دینے کی کوشش کرتے ہیں تو آج بھی یہ سلسلہ جاری رہے گا پہلے میں نے ایک پروگرام کیا تھا جس میں حضرت مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام کے خاندانی حالات کا ذکر کیا تھا کہ آپ کے آباء و اجداد جو ہے وہ کہاں سے ہجرت کرکے جو ہندوستان میں تشریف لائے ہیں اور تفصیل کے ساتھ بیان کیا گیا تھا کہ سندھ کے علاقے سے آپ کے آباء و اجداد تھے وہ ہندوستان میں آئے اور وہاں پر قادیان کی بستی اپنے آباد کی اور کی تعداد بہت زیادہ جادہ جو قصبہ اور گاؤں تھے ان کے مالک تھے پھر آہستہ آہستہ وہ جو جائیداد تھی وہ آپ کے ہاتھ سے جاتی رہی تھی کہ وہ نیک بخت کرلیا غیرہ تو بات وہاں ختم ہوئی تھی کہ جہاز تقدس مسیح موعود علیہ السلام کی پیدائش کا وقت آ گیا تھا تو آج ہے بات وہاں سے آگے بڑھاتے ہیں اور آپ کی پیدائش سے لے کر اگلے کچھ سالوں تک کا ذکر کرنا مقصود ہے ہے اس کا ایک رخ یہ بھی ہے کہ قرآن کریم میں انبیاء کی صداقت کی ایک یہ دلیل بھی دی گئی ہے کہ نبوت کے دعوے سے پہلے تحقیق جو ان کی زندگی ہوتی ہے وہ ہمیشہ پاکیزہ ہوتی ہے ان پر کوئی شخص کسی قسم کا الزام نہیں لگا سکتا اور یہی دلیل جو ہے اپنی صداقت میں آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے بھی پیش کی اور قرآن کریم میں اس کا ذکر موجود ہے جانتے ہیں کہ کفار مکہ جو تھے وہ حضرت صلی اللہ علیہ وسلم کو طب نبوی سے پہلے صادق اور امین کہا کرتے تھے کہ آپ اپنی سچیاں بہت ہی ایماندار ہے لیکن جوں ہی آپ نے دعویٰ کیا تو انہوں نے آپ کو بتا دیا تو آپ نے فرمایا کہ فقہا و صوفیا کو مرمان قابل ہیں افلا تعقلون ایک لمبا عرصہ چالیس سالہ زندگی میں نے تم لوگوں میں گزاری ہے میں نے تو کبھی لوگوں کے ساتھ جھوٹ نہیں بولا تو کیسے چاہت میں خدا پر جھوٹ باندھنا شروع کر دوں گا کہ میرے سے وہ بری حالت نازک کرتا ہے اور مجھے موت کے مقام پر سرفراز کیا ہے ہے تو اسی دلیل کو اگر ہم حضرت مرزا صاحب کی زندگی پر لاگو کرے تو آپ پر جو ہے مرزا صاحب کی صداقت بالکل واضح ہو جائے گی پچھلے کسی شہر میں کہہ دو ستاروں نے کہا کہ آپ مرزا صاحب کی کتابوں کے بارے میں دو میں بار بار بتاتے رہتے ہیں کہ فلاں کتاب میں یہ لکھا ہے یہ کتاب آپ کو اس جگہ سے مل جائے گی لیکن آپ لوگوں نے کبھی مرزا صاحب کی زندگی کے بارے میں کوئی بات نہیں کی اس کی کیا وجہ ہے تو میرے بھائی آج جو ہے اسی آپ کی یہ درخواست بھی یہ آپ کی جدوجہد بھی اسی کے مطابق جو ہے اس کے پیش نظر حکومت نے مرزا صاحب کی کتاب سے پہلے کی زندگی جو ہے اس کو مختصر طور پر کھڑے دس سے بارہ منٹ میں آپ کے سامنے پیش کرتا ہوں تو یہ بات ذہن میں رکھیں کہ آپ نے بڑی دلیل دن میں لے کے آنی ہے جو کہ آنحضرت صلی وسلم نے اپنے نبوت کے حق میں قائم کیے کہ میرے دعوے سے پہلے کی زندگی کو دیکھو شجر نسب موت علیہ السلام نے بھی اپنے مخالفین کو بڑا واضح طور پر یہ فرمایا کہ اب تو تم میری مخالفت کرتے ہو لیکن یہ ناممکن ہے کہ تم میرے دعوے سے پہلے کی زندگی میں کسی قسم کا کوئی تعلق یا دبا دیا اور اب تک اس کو کسی قسم کا اعتراض ہے وہ نہیں کر سکتے اور ایک سو تیس سال سے زائد عرصہ ہو چکا ہے آپ کیسے چینج گوگل ابھی تک کوئی چیز ہے آپ کے زندگی ہے آپ کی بعثت سے قبل کی آپ کے دعوے سے قبل بھی اس پر کوئی اعتراض نہیں کر سکتا آپ کے والد صاحب کا نام جیسے کہ گزشتہ پروگرام جس کا میں نے شروع میں حوالہ دیا تھا اس نے ذکر کیا تھا کہ آپ کے والد صاحب کا نام عذبۃ مرزا غلام مرتضیٰ صاحببی بی صاحبہ تھا دونوں سے پانچ بچے ہوئے پہلی لاولاد ہوئی دونوں کی ایک لڑکی تھی جس کا نام تھا عزت مراد بی بی صاحبہ یہ بہت ہی صاحب یہ رویہ اور کشش خاتون تھیں اور خدا تعالیٰ سے بڑا خاص ان کا ایک کام تھا اس کے بعد آپ کے ایک اور بیٹے ہوئے جس کا نام تھا مرزا غلام قادر صاحب یہ جو ہے کی معزز عہدوں پر اپنی زندگی میں جو ہے وہ فائز رہے اور زیادہ تر لوگ جو ہے وہ انہیں کو جانتے تھے کہ آپ مرزا صاحب کے بڑے لڑکے ہیں اس کے بعد جو ہے ایک اور بیٹا پیدا ہوا لیکن وہ جلد ہی فوت ہوگیا پھر چوتھے نمبر پر ایک بیٹی پیدا ہوئی جس کا نام تھا اس جنت بی بی صاحبہ یہ اور حضرت مسیح موعود علیہ السلام جو تھے وہ جڑواں پیدا ہوئے پہلے وہ لڑکی پیدا ہوئی جس کا نام تھا جنت بھی اس کے بعد حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام پیدا ہوئے تھے اور اس کے جو بعض ضدی فومیک پیچھے بھی مضبوطی کو مسیح موعود امام مہدی جو ہوگا وہ تمام پیدا ہوگئی ہے ان کی جگہ پیدا ہوتا اگر کوئی بات نہیں میں نے بھی ایک کتاب میں اس کا ذکر کیا ہے کہ آنے والا امام جوہری منصوبہ کس جگہ پیدا ہوگا اس لحاظ سے یہ پیشگوئی شروع کی تھی وہ پوری ہوگی کہ آپ کہاں پیدا ہوئے پہلے آپ کی بہن پیدا ہوئی اور پھر حضرت مسیح موعود علیہ السلام پیدا ہوئے وہ جو پہلے تھی وہ تو جلدی مسیح موعود علیہ السلام کو لمبی عمر عطا کرے تو وہ پانچ بچے تھے تو آپ کے والدین کے پیدا ہوئے  کے اس زمانے کی یہ بات یاد رکھنی چاہیے کہ تاریخ پیدائش کو اس طرح جیسے آجکل نوٹ کرتے ہیں جاتے ہیں گزرے زمانے میں کوئی رواج نہیں تھا اور خاص طور پر جو کہ وہ سکھوں کا زمانہ تھا اور آپ کا خاندان جیسا کہ ہم نے پہلے ذکر کیا تھا اس پروگرام میں بڑھتے ہی مشکل حالات سے مشکل دور سے گزر رہا تھا تو اس طرح کا کوئی ریکارڈ جو ہے وہ رکھا جا سکتا کہ ایک جس پر کہا جا سکے کہ واقعی یہ تاریخ پیدائش ہے لیکن ابھی تک آپ کی پیدائش ہے وہ 13 فروری 1835 کو جمعہ کے روز ہوئی آپ کی پیدائش کے ساتھ تھی میں نے آپ لوگوں کے حالات جو ہے وہ نسبت بہتر کرنے شروع کر دیے اور شروع سے یہ آپ کا بچپن جو بڑا ہی پاکیزہ اور نفیس تھا کہ ہونہار بروا کے چکنے چکنے پات کے شروع سے ہی خدا تعالی نے خاص طور پر اقبال کی عطا کی ہوئی تھی اور بچپن میں جب بچوں کو کھیلنے کودنے کا شوق ہوتا ہے آپس میں لڑتے جھگڑتے تھے لیکن آپ کا بچپن جو ہے بڑا ہی پاکیزہ تھا چھوٹی عمر کا ایک بڑا مشہور واقعہ ہے آپ اپنے ہم عمر لوگوں کو کہتے ہیں کہ دعا کرو کہ اللہ تعالیٰ مجھے نماز نصیب کرے اسی امر ہے لیکن اس وقت بھی خدا کی محبت جو ہے آپ کے سینے میں دل اور دماغ میں بہت دن میں اور اپنے ہم عمروں کو کہتے ہیں کہ دعا کرو کہ اللہ تعالیٰ مجھے نماز ادا کریں کرے کسی بھی قیدی کو دیکھتے ہوئے ذکر آتا ہے کہ ایک مولوی صاحب والد کا نام تھا غلام رسول صاحب ایک ولی اللہ صاحب کشف اور وہ انسان تھے جب انہوں نے حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام کو بچپن میں دیکھا انہوں نے کہا کہ اپنی بصیرت کی نظر سے کہا کہ اگر اس زمانے میں کوئی نبی ہوتا تو یہ لڑکا جو ہے اس میں وہ لکھتے ہیں کہ یہ کسی زبان میں نبی بن سکتا سے پتہ چلتا ہے کہ شروع سے بڑی پاکیزہ زندگی تھی آپ کی تعلیم کا تعلق ہے جیسا ہم نے ذکر کیا وہ سکھوں کی حکومت تھی اس وقت جو ہے بہت زیادہ تعلیم کی طرف جو ہے وہ جہاد نہیں تھا تو لوگوں میں جو تحریک اور تھا وہ یہ تھا کہ کہ کسی بھی آپ کو مقرر کر دیا کرتے تھے کہ وہ گھر میں آ کے بچوں کو بنیادی قسم کی جو ہے وہ تعلیم دیتے آپ کے والد صاحب نے بھی ایسا ہی کیا اور جب آپ نے پانچ سال کے ہوئے تو ایک فارسی معلم ہیں جن کا نام تھا فضل الہی صاحب ان کو رکھ دیا انہوں نے آپ کو فارسی میں پڑھائی قرآن کریم میں بائیں بازو اور بنیادی چیزیں بھی سکیں اور پھر جب کچھ عمر زیادہ ہوئی تو پھر نہیں طور پر علم کو جو عربی دان تھے ان کا نام تھا فضل احمد صاحب کہ آپ کے والد صاحب نے ان کو آپ کی تالیف پر مقرر کیا تو انہوں نے بعض قواعد بنیادی قواعد ہوتے ہیں صرف اور نحو کہ وہ پڑھائی آپ کو مصیبت علیہ السلام فرماتے ہیں کہ میرے دونوں استادوں کا نام ایک کا نام فضل الہی کا ایک کا نام فضہ تھا اس میں بھی اللہ تعالی کی ایک خاص حکمت تھی کہ مجھے جو بھی تعلیم دی گئی وہ خدا تعالیٰ کے فضل کے تحت دی گئی نا کے دنیا بھی لوگوں کا اس میں کوئی عمل دخل نہیں تھا پھر ایک اور استاد کے احترام میں نے آپ کو مشترکہ حکمت عملیکیونکہ وہ بہت بڑے گیم تھے ان سے آپ نے وہ دوسرا دیکھیے پھر جب شادی کی عمر کو پہنچے تو آپ کی شادی جو حضرت بی بی صاحبہ سے ہوئی ان سے آپ کے دو بچے ہوئے بڑے بیٹے جو حضرت سلطان احمد صاحب وہ میں پیدا ہوئے اور دوسرے جو تھے ان کا نام تھا مرزا فضل الرحمن صاحب کی نظر میں جو ہے وہ پیدا ہوئے ان جو دوسرے بیٹے ہیں مرزا فضل احمد صاحب ان کی وفات حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام کی زندگی میں ہی ہوگئی ہے جو حضرت امیر حمزہ سلطان احمد تھے یہ اعزاز حسین علیہ السلام کی وفات کے بعد بھی جو زندہ رہے اور انہوں نے دونوں بچوں نے آپ کی زندگی میں آپ کی بات نہیں کی تھی لیکن جو بڑے بیٹے ملتان میں انہوں نے جو جماعت احمدیہ کے دوسرے خلیفہ تھے ان کے دور خلافت میں حضرت مسیح موعود علیہ السلام کی بیعت کی لیکن کبھی دونوں نے مخالفت نہیں کی بڑا ہی محبت کا تعلق تھا عہد بودا جو ہے وہ تعلق تھا تھا ہے بعض اوقات آپ کے والد صاحب جو ہیں وہ آپ کو مجبور کر کے ہر وقت جو ہے مسجد میں ہیں اور دینی کاموں میں ہی نہا کر باہر نکل کر لوگوں سے ملا کرو اور بعض افسران جو ان سے ملنے آتے تھے کیونکہ وہ اس روایت سے ان کو ملواتے ہیں کسی طرح سے یہ ان کے ساتھ لے آؤ تاکہ بعد میں ان کی نوکری کے سامان بھیجا ہے بحث کے دوران انہوں نے جب دیکھا کہ زیادہ تر نوجوان جو ہے اگر مرزا صاحب کا دینی کتب کی طرف ہے تو آپ نے انہیں بعض مقدمات کی پیروی کے لیے لگا دیا جا سکتا کہ آپ نے ذکر کیا تو پہلے بھی کہ آپ کی زمینیں اور جائیدادیں اور بعد میں آپ سے چھین لیے گئے تھے سکھوں کی حکومت میں لیکن آپ کے والد صاحب کی کوشش کی تھی جسے عدالت میں مقدمات جو ہے دوبارہ اٹھا کر کسی طریقے سے وہ زمینیں اور جائیدادیں جگہ واپس مل سکے ہیں ان قسم کے مقدمات کی پیروی کے لیے انہوں نے کہا کہ چار مقدمات کے لئے جایا کرو عدالت میں آپ کا دل نہیں چاہتا تھا لیکن وہ  والد صاحب کی اطاعت میں جو ہے آپ چلے جایا کرتے تھے لیکن اس کے باوجود جو ہے دل خدا تعالیٰ کی یاد میں آپ کو کہتا تھا اور ویسے بھی واقع ہے کہ ایک دفعہ عدالت میں بغیر نماز کا وقت ہوگیا تو فریق مخالف تھا اس نے سوچا کہ توبہ دے جلدی جلدی سے کہا کہ مقدمے کا فیصلہ کردیں تو آپ کا کام ہے میں نے تو پہلے نماز پڑھنی ہیں اور گری میرے خلاف بولتے ہیں تو ٹھیک ہے پھر دے آپ نے اپنی نماز پڑھی اور پھر اس کے بعد جو ہے کمرہ عدالت میں لے کے لیے قرآن چل پڑے گی آپ کو نشان دیکھا تھا کہ وہ ہمیشہ آپ کے ساتھ ہے اور اگر اس کے ساتھ آپ کا لگا لیں گے تو پھر دنیاوی چیزوں کی کوئی حیثیت نہیں ہے کمرہ عدالت میں داخل ہوئے تو جج نے بتایا کہ مقدمے کا فیصلہ پہلے ہی کردیا ہے یعنی کہ آپ کے حق میں کیا ہو گیا فیصلہ اور آپ کا اللہ تعالی کی ذات پر لکھی ہے اور مزید پختہ ہو گیا یا ان کی خدمات کے متعلق جو ہے آپ کی صداقت اور شرافت کا ذکر آتا ہے کہ آپ کے مخالفین بھی کہا کرتے تھے کہ اگر گواہی دینی ہے تو مرزا غلام احمد کی گواہی قبول کریں گے اب ایک مقدمہ جیت کر آئی لیکن مخالفین جانتے ہیں کہ یہ تو جھوٹ بولتا ہے اس لئے بعض جو بات ان کے حق میں جانتی تھی وہ کہہ رہے تھے کہ مرزا غلام احمد سے پوچھ لو کیونکہ وہ سچی گواہی دیتا ہے اور ایسا بھی ہوا کہ آپ نے گواہی دی اور مقدمہ آپ کے خلاف ہو گیا تو واپس گھر کے والد صاحب نے ناراض ہوئے کہ تم نے کیا کر دیا تم نے میری بس یہی طبیعت ہے کہ میں جھوٹ نہیں بول سکتا تو یہ ثابت کرتا ہے کہ آپ کی پہلی زندگی بھی ہے بڑی پاکیزہ تھی اب چل رہی ہے آنٹی کی یہ پہلا موقع تھابالکل سامنے جاتے ہیں تو حضور آپ سے بڑی محبت کے ساتھ پیش آتے ہیں اور کہتے ہیں کہ مرزاغلام میں تمہارے ہاتھ میں کیا ہے کہ مجھے اس وقت ایسا محسوس ہوتا ہے جیسے ایک کتاب ہے لیکن جو میں لکھی ہوئی ہے لیکن وہ کتاب آخری پیش ہوگی گویا کہ وہ ایک پل بن گیا اور پھل جو ہے وہ امرود کی طرح ہے لیکن بہت بڑا ہے اور آنحضرت صلی وسلم نے اس کو اتنا زیادہ اس میں سے راستہ نکالنا شروع ہوگیا کہ ناقابل یقین ہے اور ایک مردہ شخص لیٹا ہوا تھا ادھر بھی تو جب ایک اس کی کاشت اتار کر اس شخص کو دی گئی تو وہ پردہ جو ہے وہ زندہ ہو گیا اس میں آپ نے یہ تاکید کی کہ میرے پیسے اپنے میں کلومڈ سے مراد اسلام ہے جو کہ اسلام ایک مردہ کی حالت پر پہنچ چکا ہے اور اس زمانے میں عطا اللہ آپ کے ذریعہ سے اس کو دوبارہ زندہ کرے گا کہ یہ مشہور تھا کہ آپ نے 1984 میں دیکھا پھر اسی دوران جو ہے ایک انگریز حاکم آپ کے والد صاحب سے ملنے آئیں انہوں نے آپ کے والد صاحب نے آپ کو پیغام بھجوایا کہ زراعت کے انگریز سے ملو تاکہ تمہاری نوکری کے کوئی سامان پیدا کر سکے آپ آئے اور کہا کہ میں نے تو جس کا نام پر ہونا تھا وہ ہو گیا ہو تو والد صاحب نے حیران ہوئے کہ واقعی تو نوکر ہوں گے آپ نے کہا کہ ہاں میں نے اس نوکری کرنی تھی وہ کرلیں تو مراد یہ تھی کہ میں نے اللہ کی نوکری کر لیتا کے والد صاحب نے فرمایا کہ ٹھیک ہے پھر جاؤ اس بات میں کوئی نہ کوئی نوکری جو تم کرو پھر وہی کے اصرار پر آپ سیالکوٹ چلے گئے تین سو ساٹھ میں یہاں تک تیار کی اور وہاں بھی لوگوں نے آپ کی شرافت کی آپ کی صداقت کی آپ کی دل آزاری کی جو ہے وہ بارگاہ یادیں اور یہ بھی اللہ تاللہ نے ثابت کردیا کہ کیسے ہو آپ کے ساتھ ہیں سیالکوٹ ہیں آپ کی ملازمت کا ایک واقعہ ہے کہ زخمی ہوئے تھے آدھی رات کا وقت تھا تو اچانک آپ نے کچھ آواز سنی تو اپنے ساتھ لے کے منہ سے کوئی آواز نہیں لگتا ہے کہ شاید چودنے والی ہے لوگوں نے کہا کہ شاید کوئی غیر ہو شادی وغیرہ میں تو سو جاؤ اب لوٹ کے پھر تھوڑی دیر بعد دوبارہ آپ کو اور آپ نے دوبارہ وہی آواز سنی ہے پھر بتایا کر کے سو جائیں تیسری دفعہ ہوئی تو آپ نے سب کو سب کے سامنے آئی کہ فورا اس سے نیچے اتر جاؤ ایک ایک کرکے آپ نے سب کچھ اچھے ہوتا ہے اور جب آپ گھر پر سب برے تھے اور زمین پر گر گیا اور ساری چارپائی جدید میں فرش پر آگیا اور اگر لوگ وہاں رہتے تھے وہ ہلاک ہو سکتے تھے تو یہ خاص اللہ تعالی نے آپ کی تائید فرمائی کہ آپ کے ذریعے سے بہت سارے اور لوگوں کو بھی اس کی ہلاکت سے بچا لیا تو اس بات کا خاص اثر ہوا ان لوگوں پر اور اہل محلہ پران کا یہی وہ دور تھا جب کے عیسائیت اپنے عروج پر تھی ہندوستان میں 25 پادریوں سے آپ کے ذہن و احساس ہونا شروع ہو گئے پارلیمنٹ کے جوتے بڑے بے شرم آدمی تھے سیالکوٹ میں ان کے ساتھ آپ نے بحث و مباحثہ شروع کردی اور آپ کو بڑی عقیدت کی نظر سے دیکھتے تھے اور باوجود دوسرے انسانوں کے روکنے کے بعد ڈاکٹر صاحب آپ کے مطابق میں آکے آپ کے ساتھ مختلف قسم کی جو ہے وہ بحث کیا کرتے تھے a30 میں آپ کی والدہ کی وفات ہو جاتی ہے اور پھر اسی دوران جو ہے آپ کے والد صاحب کہتے ہیں کہ آپ واپس آ جائے آپ کا دیا تم نے آپ سے واپس آ جاتے ہیں اور پھر جو ہے دوبارہ نئے مشاغل میں جو ہے اپنا زیادہ تر وقت گزارتے ہیں عبادت ہوتی ہے 1300cc وقت ہے جب اللہ تعالی نے آپ پر کرپشن کے الزامات کا دروازہ کھولا شرکاء میں نے پہلے ذکر کر دیا آپ دے الہام ہیں جو پاس جماعتیں تاریخ کے مطابق پہلا الہام ہے جو آپ کو ہوا اس کی اس واقعہ یہ ہے کہ ایک اہل حدیث مولوی مولوی محمد حسین بٹالوی صاحب ان کے ساتھ کسی شخص نے مباحثہ کرنا تھا تو جو آپ وہاں گئے ہوئے تھے تو کسی شخص نے کہا کہ عمر صاحب آپ مولوی محمد حسین کے ساتھ جو مباحثہ کریں تو آپ چلے گئے اب مولوی محمد حسین سوچا کہ آپ کا کیا عقائد ہیں اس نے کہا کہ سب سے افضل جو ہے میرے عقیدے کے مطابق اللہ تعالیٰ کا کلام ہے یہ نہیں کہ قرآن مجید کیا ہے کیسے لوگ بیٹھے ہوتے ہیں تو وہ تو بس اسی مزار کے لئے ایک دوسرے کو نیچا دکھانے کے لئے اور نعرے بازی کے لیے اللہ کے لیے تو آپ لوگوں میں اس کی تو کوئی نہیں ہے آپ اس سلسلے میں کچھ کر گھر آ گیا تو آپ کو الہام ہوا کہ خدا ان سے خوش ہوا ہے صرف خدا تعالیٰ کی رضا کی خاطر اپنے لوگوں کی پرواہ نہیں پتہ چلا کہ خدا کا کلام ہے اگر وہ مانتا ہے تو میں بھی استعمال کرتا ہوں تو پھر آپ کو الہام ہوا کہ خدا تیرے اندر سے خوش ہوا اور وہ تجھے بہت برکت دے گا یہاں تک کہ بادشاہ تیرے کپڑوں سے برکت ڈھونڈیں گے یہ وہ آپ کو پہلا انعام تھا جب کہ آپ کو اللہ تعالی نے ادا کئے اس کے بعد وہ اعمال سے ایک دروازہ کھل گیا تو انشاء اللہ تعالیٰ اس کے متعلق آیندہ پروگرام میں شرکت کروں گا اور کون سے آپ کو سب سے پہلے الہام ہونا شروع ہو گئے اور پھر آپ کی دعوت کی زندگی کو مزید ہم جو ہے وہ اس کا بیان کریں گے تو آخر پر جو ہے وہ میں میں بعض جو آپ کے ہم عصر لوگ تھے ان کے آپ کے بارے میں کیا تاثرات تھے وہ بتا دیتا ہوں کیا تھا کہ آپ نے اپنی قوم کو چیلنج کیا کہ تم میرے خلاف جو ہے وہ کوئی بھی انگلی نہیں اٹھا سکتے کہتے کہو کہ تم تمہاری زندگی جو ہے وہ فلاں ملک میں خرابی ہے غلط کام کیا کرتے تھے جھوٹ بولا کرتے تھے تو کوئی ایسا جو ہے وہ بات میرے خلاف تم ثابت نہیں کرسکتے اس لیے یہ بھی آپ کی صداقت کی دلیل ہے جو کہ میں نے ذکر کیا ہے تو بعض جو اس وقت کے آپ کے جو ہمارے لوگ تھے علماء تھے ان کی جو ہے یا بعد میں انہوں نے لکھا آپ کی زندگی کے متعلق ان کے بعد ذوالحجہ آپ کو دکھا دیتا ہوں میں آپ کیا فرماتے ہیں کہ کوئی ایپ اختراع جھوٹی آغا کا میری پہلی زندگی پر نہیں لگا سکتے تو خیال کرو کہ جو شخص پہلے سے جھوٹ اور افتراء کر دی ہے یہ بھی اس نے جھوٹ بولا ہوگا google تم میں ہے جو میری سوانح زندگی میں کوئی نقطہ جی نہیں کر سکتا کر سکتا ہے بس خدا کا فضل ہے جو اس نے ابتداء سے مجھے تک وہاں پر قائم رکھا اور سوچنے والوں کے لئے یہ ایک ریاضت شہادتین سے حوالہ ہے ہے وہ آپ کے متعلق فرماتے ہیں کہ مؤلف براہین احمدیہ مخالف اور موافق کے تجربے اور مشاہدے کی رو سے شریعت محمدیہ پر قائم و پرہیزگار اور صداقت جائز ہے یا آپ کے دعوے سے پہلے کی زندگی کا بات کریں گے جوانی کے واقعات سچے اور پرہیزگار تھے پھر مولانا ابوالکلام آزاد صاحب جو ہیں وہ آپ کے متعلق لکھتے ہیں کہ کیریکٹر کے لحاظ سے مرزا صاحب کے دامن پر سیاہی کا چھوٹے سے چھوٹا بھی تو نظر نہیں آتا وہ پاکباز کا جنازہ کیا اور اس نے ایک متقی کی زندگی بسر کی ہے جب آپ کی وفات ہوئی تو انہوں نے بیان شائع کیا آپ کی زندگی کے متعلق تو اس وقت کی بات ہے فرماتے ہیں کہ اگر کے لحاظ سے مرزا صاحب کے دعوی پر سیاہی کا چھوٹے سے چھوٹا دھبہ نظر نہیں آتا وہ پاکباز کا جنازہ کیا اور اس نے ایک متقی کی زندگی بسر کی غرض یہ کہ مرزا صاحب کی ابتدائی زندگی کے پچاس سالوں نے بلحاظ اخلاق وعادات اور کیا بالحاظ کے تما تو ہمارے دین مسلمانان ہند میں ان کو ممتاز برگزیدہ اور قابل رشک مرتبہ پہنچا دیں اگر آپ یہ دیکھنا چاہیے تو اخبار العالمیۃ 2008 کی تعداد میں اس کا ذکر ہے ہے پھر تھے فرماتے ہیں اخبار زمیندار کی لیڈر تھے کہتے ہیں کہ ہم چشم دید شہادت سے کہہ سکتے ہیں کہ جوانی میں بھی نہایت سالے اور متقی بزرگ تھے آپ بناوٹ اور اس طرح سے بڑی تھے یہ ہے بات جادو وہ جو سر چڑھ کر بولے ابھی میں کہاوت ہے کہ الفضل ما شھدت بہ الاعداء کی قرات کرے تو دیکھیں آپ کے مخالف ہیں جنہوں نے آپ کو نہیں مانا وہ بھی کہتے ہیں کہ آپ جوانی میں بھی نہایت الحکمۃ کے انسان تھےاسٹیج راہِ خدا کی صفات اپنے طور پر نظر آتی ہے ہے پھر پھر جو 12 مختلف مقدمات میں آپ کے ساتھ رہا ہے وہ کہتا ہے کہ مرزا صاحب کی عظیم الشان شخصیت اور اخلاقی کمال کا میں قائل ہوں میں نے کامل راستباز جو ہے یقین کرتا ہے ساری دنیا جو ہے آپ کو جواب دیں گے کی فحش ویب سائٹس پر مل جائیں گی پھر آپ کو ہی ٹائپ کریں یا جنسی مواد اور اسلام کی پاکیزہ زندگی اس دن بھائیو کون ذکر کیا ہے وہ ساری آپ کو یہاں پر مل جائیں گی اس کے علاوہ جس کتاب سے میں آپ کو یہ بات بتا رہا تھا وہ بھی آپ کو جماعت احمدیہ کے آفیشل ویب سائٹ سے مل جائے گی علاوہ ازیں مسیح موعود علیہ السلام کے حصے میں جائیں اور یہاں آپ جائیں حیات طیبہ تو یہ بہت ہی عمدہ کتاب ہے جو اسلام کی زندگی کے متعلق آپ کی صحت کے متعلق ہے تو یہاں سے مثالیں معلومات اور حوالہ جات جن کی بنیاد پر کیا ہے آپ کو مل جائیں گے یہی وہ باتیں ہیں جو آج کے پروگرام کے پہلے حصے میں لیکن کرنی تو صلیب ہو گیا ہے لیکن جو کہ بہت ہی اہم موضوع تھا اور خاص طور پر میری ہمارے جو دوست سے میں آتے ہیں ان سے درخواست کی کہ وہ دور بھی کریں بالکل وہی دلیل ہے جو حضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی شناخت کے طور پر بھی اگر آپ سچے دل سے پاک دل سے صاف ذہن سے دیکھیں گے تو آپ رضوی صاحب کی صداقت جائے تو بالکل واضح ہو جائے گی آپ کے جولائی سوالات ہیں ان کی طرف آتے ہیں لوگوں نے حسب معمول السلام علیکم کہ ان میں سے بعض کے نام پر دیتا ہوں میں اس کی مناسبت سے فرید آباد شریف صاحبہ کوکنگ صاحب حرفی اختر صاحب کی کتابیں صاحبہ ظفر احمد صاحب اس طرح اور بہت سارے لوگوں نے السلام علیکم کہا ہے آپ سب کو وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ آپ سب کا بہت بہت شکریہ کہ آج کا پروگرام کے عرصے میں آپ ہمارے ساتھ شامل ہوئے بے حد سے سوا لے لیتے قونصلر چودھری صاحب کا کہتے ہیں کہ نبی اور رسول میں کیا فرق ہے بنیادی طور پر کوئی فرق نہیں ہے جماعت احمدیہ کے عقیدے کے نزدیک دونوں میں کوئی فرق ہے مختلف ہیں جو خدا تعالیٰ نے نبیوں کو عطا کرتا ہے نبی دراصل نا باعث لکھتا ہے اس کا مطلب ہے کہ ایسا شخص جو کثرت سے اللہ تعالی سے خبریں پائے اور رسول ایک ایسے شخص کو کہتے ہیں جو کہ پیغام آگے پہنچائے اس لحاظ سے فرشتوں کے لیے بھی بات کرنے کے لیے میں رسول کا لفظ استعمال ہوا ہے کیونکہ وہ اللہ تعالی کا پیغام جو ہم واقعی چاہتے ہیں تو نبی خدا تعالی سے خبر پانے والے کو کہتے ہیں اور رسول اس خبر کو پا لیتا ہے وہ کام جو اللہ تعالی دیتا ہے اس لیے اس کو لوگوں تک پہنچانے والے کو اللہ اور رسول کہتے ہیں تو اس میں کوئی فرق نہیں ہے اچھا جان صاحب کہتے ہیں کہ اور اس پر اس کی بیوی آواز بلند کرتے ہوئے آگے بڑھیں اور اپنے چہرے پر ہاتھ مار کر کہا میں باندڑیاں اس پر روشنی ڈال دیں اس آیت کا حوالہ دے کر بھائی نے کہا کہ ماتم جائز ہے یا نہیں یہ ماتم کی تو پھر بات نہیں ہوئی ہے یہ اس وقت کی بات ہے جب اللہ کے رسول یا فرشتے کہ حضرت ابراہیم علیہ السلام کے پاس آئے اور انہیں ایک لڑکے کی بشارت دیتے ہیں تو اس وقت حضرت سارہ جوتی آپ کی بیوی بھی یہ بات سن رہی تھی تو جب انہوں نے حضرت سارہ اور ابراہیم علیہ السلام حضرت اسحاق کی خوشخبری دی تو جیسے حالانکہ میں بعض اوقات ہی کیا ہے انہوں نے تمہارا واقعی مجھے میں تو گیا ہوں مجھے لڑکا ہوگا یہ ماتم کی تو بات ہی نہیں ہو رہی تو خوشی کے موقع پر جب اچانک انسان حیرانگی کا اظہار کرتا ہے اس وقت جیسے عظیم ایک خوشخبری ملے گیجو کہ مصیبت کے شروع میں تیار کیا جائے کہ بعد میں تباہی جاتا ہے تو اگر کسی عزیز کی وفات ہوئی ہے ایک دو تین دن تک تو ٹھیک ہے لیکن اس کے بعد کرنی ہے اس لئے ماتم کرتے رہنا اس اسلام میں ہرگز کوئی اجازت نہیں ہے ہے ہے ہے کیا طالبان کی طرح عورتوں کو سختی سے پردہ کرنا جائز ہے پردے کا حکم قرآن کریم میں حکم آتا ہے لیکن طالبان نے اس میں بہت زیادہ شدت اختیار کی ایسی شدت کے قائل نہیں ہیں لیکن جو پردے کی تعلیم قرآن کریم نے دیا اس بار ہم نے عمل کرنا ہے ہے اچھا کہتے ہیں کہ شب معراج کا پورا واقعہ کس کتاب سے ہے کچھ تفصیل بتا دیں یا اس کے متعلقات صاحب نے ایک پروگرام بھی کیا تھا تحصیل جس میں معراج اور اثرات کے متعلق جب ساری تفصیل بیان کی تھی ہماری پلےلسٹ میں جائیں تو وہ اوکے گوگل تفصیل کے ساتھ یہ واقعات دونوں بیان کئے جانے کے لیے جو ہے آج بیان کرتے لیکن وہ جس کا آپ فکر ہے وہ سیرت خاتم النبیین ہے اگر آپ کے حملے کے پیچھے ویب سائٹ جائے تو سیرت خاتم النبییین میں ایک حصہ جو معراج اور اس کے متعلق ہے ویسے کل یہی ہے کہ لوگوں کو غلطی لگی ہے کہ کہ جو ہے انہوں نے ایک ہی واقعہ سمجھ لیا یہ دو مختلف واقعات میں معراج میں حضور صلی وسلم جو ہے ان کو انسانیت پر آسمانوں کی سیر کرائی گئی ہے کہ وہ روحانی گرفت اور اس کے متعلق قرآن کریم میں بھی آتا ہے کہ ما کذب الفؤاد ہمارا دل نے جھوٹ نہیں بولا جو کس نے دیکھا یہ نہیں کہ یہ دلی کیفیت تھی جو کہ اللہ تعالی نے آپ کو شرمندہ کی تھی تو معراج کی رات آپ آسمانوں کی سیر پر مختلف انداز سے آپ کی ملاقات کی ذلت اللہ کے دربار تک کہ وہ ہیں جو ہے پانچ نمازیں فرض ہوئیں لیکن اس کا جواب ہے وہ مختلف اعظم یا بیت المقدس کی طرف گئے مختلف انبیاء کے اپنے ذہنی طور پر جو ہے ان سے ملاقات ہوئی ان کی امامت کروائے تو یہ دو مختلف واقعات ہے مسلمان سمجھتے ہیں کہ جسمانی طور پر ہوئے جسمانی طور پر ہرگز نہیں ہوئے یہ دونوں روحانی کا شکار تھے اور اس کی ایک اور دلیل یہ بھی ہے کہ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہ فرماتی ہے یہ کس نے کہا کہ حضرت حسین ہم نے معراج میں اللہ تعالیٰ کو ظاہری آنکھوں کے ساتھ دے گا اس نے بالکل جھوٹ بولا کہ کیا ایسا ممکن ہے یہ بھی آتا ہے کہ آپ خانہ کعبہ سے اور جب آپ اچھے تو سنا پہنچ گئے تھے کہ آپ سوئے ہوئے تھے پھر وہ کشف کے الٹ جاتی رہی تو تصویر کے لئے آپ کو پروگرام دیکھ لیں اس کا ٹائٹل ہے معراج اور ان کی حقیقت ہمارے اس میں جائیں اور اگر آپ نے مزید تفصیل سے پڑھنا ہے تصویر کائنات میں سنجیدہ ہے رمضان شریف صاحب مرزا بشیر احمد ایم اے کی ہے اور جانے کب سے جا کے دیکھ سکتی ہےاگلا سوال یہ ہے کہ اللہ تعالی پر توکل کیسے قائم کیا جائے اللہ تعالی کی ذات میں پہلے تو یقین ہونا چاہیے کہ جب تک وہ یقینا قابل نہ ہو اس پر کیا جاتا ہے کیا جا سکتا ہے تو بعض لوگ دوسرے لوگوں پر دوسری چیزوں پر زیادہ بھروسہ ہے تو بات کرتے ہیں انہی کو اپنا خدا بنا لیتے ہیں کہ ان کی مدد کے بغیر جانے والی یہ مشکل نہیں ہو سکتی تو خدا تعالیٰ سے اس کے لیے دعا بھی کرنی چاہیے کہ اپنی ذات پر کامل یقین عطا کرے اور پھر جب یقین ہو جائے کہ واقعتا یہ ہے کہ سارے معاملات میں اس پر توکل ہو جائے گا اس کے لئے دعا ضروری ہے اس کے لئے خدا تعالیٰ سے مدد مانگی کہ وہ اس یقین تک پہنچا دے کہ جب ہمیں دوسروں کی کوئی کسی قسم کے آ جاتا ہے تو اس کے لیے ضروری ہے کہ انسان توبہ استغفار کریں تو ایسی کیفیت پیدا ہوجائے گی تو خدا کی ذات پر یقین آ جائے گا اس کے متعلق جو ہے انبیاء کے قصے ہیں اور اسلام کی صحت کا بھی مطالعہ کیا کریں اس سے بھی خدا تعالیٰ کی ذات پر جائیں یقین و توکل پیدا ہوتا ہے گا اچھا سوال ہے کہ جہیز کے بارے میں اسلام کا کیا کام ہے ایسا ہے تو اسلام میں کوئی کانسیپٹ نہیں ہے سادگی کے ساتھ اپنی بیٹیوں کی رخصتی کی معمولی سامان جوتا جو اس وقت میں آپ کے پاس موجود تھا وہ آپ نے دیا ان کی وصولی کے لئے ان کی خاطر اب جو ہے اس کو جو ہے غلط ایک رنگ پکڑ لیا ہے اور جو لڑکے والے ہیں وہ تقاضا کرتے ہیں کہ ہمیں جہیز لے اور ان چیزوں میں ایک ہی جائے گا یہ وہ مسائل ہیں جن کا تقاضا کرتے ہیں بالکل غلط بات ہے جو اللہ اور اس کے رسولوں میں شادی بیاہ کی تقریبات کا ذکر کیا ہے بڑی سادگی کی باتیں ہیں سادگی کے ساتھ تبدیل کرنی چاہیے اپنی خوشی سے اگر لڑکی والے کچھ دینا چاہے تو وہ دے سکتے ہیں لیکن ان کو مجبور نہیں کرنا چاہیے کہ ضرورت نہیں جینا اور جہیز میں فلاں چیز نہ ملی تو رشتہ جو ٹوٹ جائے گا لوگوں کے ساتھ آہستہ کرنے کی ضرورت ہی کیا ہے تو اس بات سے باز رہنا چاہیے چاہیے بس آج کا یورو اپنا چینل بنا سکتے ہیں کہ کسی فائدے کے لئے وہ بتا دیتے ہیں تو پھر بنا سکتے ہیں ہیں ہیں ہیں نا ملو صاحب پوچھتے ہیں کہ جب کسی کی وفات پر یہ تو لوگ کل تیسرا ساتواں اور ذمہ کیوں مناتے ہیں ہیں اور یہ رسم ہم کہاں سے آتی ہے کہ یہ جو لوگ مناتے ہیں تو نہیں پوچھنا چاہیے کہ ان کے نزدیک اس کی کیا حیثیت ہے اب تو حضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے نمونے کو دیکھتے ہیں اور ہمیں یہ ہرگز ذکر نہیں ملتا کہ حضرت صاحب نے اپنی زندگی میں کسی کی خلل پڑے ہوئے تیسرا یا ساتویں چالیسواں بنایا ہوا آپ کی جو توجہ مبارک حضرت خدیجہ اس سے زیادہ آپ کو ان کو پیار تھا ان کی وفات ہوئی آپ کے جیسا نہیں کیا آپ کے چچا حضرت حمزہ وہ شہید ہوئے آپ کی بیٹیاں جو ہے وہ شہید ہوئیں ان میں سے کسی کی وفات کے بعد آپ نے ایسا نہ کیا تو پھر آپ کے کی اور اب جو ہے وہ فوت ہوئے آپ نے کسی کو یہ نصیحت کی کہ اس کے گھر والے ایسا کریں کہ آپ کی وفات کے بعد صحابہ نے آثار قدیمہ نے بنایا کہ آپ کی وفات کے تیسرے ساتویں چالیس دن تک کوئی پروگرام میں سفر کیا اور اس میں کل پڑھے جائیں یا ختم قرآن کیا جائے پھر الخلفاء الراشدین کی وفات ہوئی تو صاحب نے ایسا نہ کیا تو یہ درس میں ہے جو لوگوں نے شروع کر دی ہیں ان کا اسلام کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے جب انسان مر جاتا ہے تو اس کا جو ہے سلسلہ منقطع ہو جاتا ہے جو ہے قرآن کریم پڑھنا اس کا کوئی فائدہ نہیں دیتا اس لئے فائدہ مند نہیں ہوتا جو اس کے لیے دعا کیجئے وہ فائدہ مند ہوتی ہے اس کے نام پر صدقہ و خیرات کیا جائے وہ فائدہ دیتا ہے اگر ایسے شخص نے کوئی عہد و پیمان کئے یہ باتیں کی اور اس کی اولاد کے گھر والوں کو چاہیے کہ اس کے بعد پورے کرے اور اچھے اعمال کریں اچھے کام خود کریں تاکہ اس کا کوئی فائدہ اس کے علاوہ اور کوئی نہیں ہےاچھا سوال یہ ہے کہ کہنا فرض نماز باجماعت ادا ہو میں تو دونوں بلا نفی الفئ میں ابھی ابھی فون نماز میں سے ایک دلیل لاؤ اگر گھر میں دو افراد ایک مرد دوسری عورتوں کا وہ ماں اور بیٹا ہمیں اور بھی ہیں بہن یا بھائی ہے اس صورتحال میں مر جو ہے وہ آگے کھڑا ہوگا اور وہ پیچھے کھڑی ہوگئی تو مرضی ہے وہی تکبیر کہہ سکتا ہے اور پھر جب نماز کی نیت کرلی تو ساتھ ساتھ کھڑے ہوجانا بھی شامل ہوتے ہیں لیکن اور طالبان مذاکرات نہیں کرے ہونا تھا وہ ماں اور بیٹا ہی کیوں نہ ہو یا باپ بیٹی کیوں نہ آؤ میاں بیوی کو بناؤ آگے بڑھنا ہوگا پیچھے جاؤ قاریوں کی وہ تقریر جو ہر مرد کو دیکہ سکتا ہے ہے ہےاچھا ایسا پوچھتے ہیں کہ کہ سوال یہ ہے کہ اگر خاکسار اکیلے نماز شروع ہے تو اکیلے میں نواز سے پہلے ایک ایماندار سکتے ہیں اس کی کوئی نہیں ہے تعاون کے بغیر جب شخص اقامت کہی جاتی ہے جب نماز باجماعت ادا کرتے ہوئے جب ایک شخص اکیلا ہو تو پھر کا مطلب کی کوئی چیز ہے اچھا کا نبوت فورم والے سال کہتے ہیں کہ ہم آپ سے سوال کرسکتے ہیں بالکل جناب لائیو سوال ہیں اس پروگرام کا مقصد ہے آپ سوال کریں جو بھی آپ نے کرنا ہے ہے ہے یہی بھائی آپ کہتے ہیں کہ مرزا صاحب نے اپنی کتاب میں بہت کچھ لکھا ہوا جس سے پتہ چلتا ہے کہ مجوزہ شریف انسان ہیں تو میرے بھائی آپ وہ والی دکھائیں جس میں لکھا ہوا ہے کہ آپ کو انسان ہی اپنی طرف سے جو ہے وہ غلط باتیں جو ہے کرنا مناسب نہیں ہے باتیں جمیل صاحب نے لکھی ایک خاص تناظر میں لکھی ہیں اور بعض اوقات جو ہے وہ شخص کہ جو عیسائی وغیرہ تھے ہندو تھے وہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات پر حملہ کیا کرتے تھے تو الزامی جواب کے طور پر آپ نے بتایا کہ تمہاری کتابوں میں تو یہ بات لکھی ہے سندیسا کے متعلق کہا کہ وہ شراب پیا کرتے تھے یہ کیا کرتے تھے تو ایسی باتیں الزامی جواب کے طور پر دی گئی ہیں ورنہ جیسا کہ میں نے آپ کو دکھایا ہے گجر صاحب کے کیلنڈر کے بعد میں تو مخالفین نے بھی گواہی دی تھی آپ ختم نبوت کے فورم سے آپ ایک کام ہے کہ غلط انفرمیشن پلانا جائز ہے تو میرے بھائی میں ضرور پوچھیں کہتے ہیں بھائی آپ نے ہماری معلومات میں اضافہ کردیا آئے آئے نئے ڈیمز آپ کی پیدائش پر روشنی ڈالیں میرے بھائی اگر آپ نے پروگرام کے شروع کا حصہ نہیں دیکھا تو میں نے آپ سے گزارش ہے کہ وہ پروگرام کے شروع میں میں نے ذکر کیا ہے مرزا صاحب کی وفات کا صاحب کے پیدائش کے متعلق تو اگر آپ نے لیٹ جائیں کیا ہے تو پلیز جب پروگرام ختم ہو جائے تو اس کے جب پندرہ بیس منٹ اس میں سارا اجمل صاحب کی پیدائش سے لے کر 1948 تک ہے وہی ذکر کیا ہے اس کو دیکھے ہیں چوری کرنے کا کیا چیک کرنا ہے مرزا صاحب نے ہرگز کوئی چوری نہیں کی آپ کا جھوٹا الزام ہے جو کہ آپ لوگ لگاتے ہیں جس کی کوئی حقیقت نہیں ہے میں تو یہی کہوں گا کہ لعنتکیا قادیانیوں پر تا قیامت لعنت ہو ٹھیک ہے جزاک اللہ سر آپ کے لیے سلامتی کی دعا کرتے ہیں کہ اللہ تعالی آپ کو ہدایت دے اور امام وقت کو ماننے کی توفیق عطا فرمائے کیونکہ وہ چاولوں کی زمینوں پر مولویوں نے اس قدر قابو کر لیا ہے کہ سوچنے سمجھنے کی صلاحیت ختم ہو چکی ہے میں آپ کو تاریخ اسلام سے ایک حوالہ دیتا ہوں اگر تو آپ کو واقعی تم سے محبت ہے عادت سے محبت ہے آپ کے صحابہ سے محبت ہے تو ضرور اس پر غور کریں گے کہ آپ اس وقت مولوی کی بتائی ہوئی باتیں بیان کر رہے ہیں مولوی کے سمجھ آئے ہوئے عقیدہ ہے وہ آگے بیان کر رہے ہیں ایک شخص آیا جیسے کہ آج کل آپ لوگ جو ہیں تو پھر سو سال سے ایسا کر رہے ہیں کہ خبردار مرزا صاحب کی کتابیں کوئی بڑی خبر دار کیا ہے جیسے کوئی بات نہ کرے تو ایسا ہی ہے کیا آپ دیکھ کے مشابہ کس صحابی کو کفار مکہ کے ساتھ کیسے بنتی ہے ایک سایہ مکہ میں وہ کسی قبیلے کا سردار تھا تو کفار مکہ نے ان سے کہا کہ محمد کے ساتھ ہر قسم سے عزت نہیں مل رہی ہے جادوگر ہے اس کی کوئی بات بھی تمہاری کام میں نہیں جانی چاہیے ورنہ تمہارا قید ہے وہ خراب ہو جائے گا وہ شخص اتنا ان کی باتوں سے متاثر ہوا تو اس نے کانوں میں روئی ٹھونس لی تھی اس کا واقعہ بالکل ٹھیک ہے جو میں نے ایسی کوئی بات نہیں سنی فسادات حکومت کی ہدایت زور تھی کچھ عرصہ کچھ تھوڑی دیر تو ادھر بازاروں میں افطاری کانوں میں ڈال کر ان کی باتوں میں آنے کی اگر محمد مجھے مل جاتا ہے تو اس کی باتوں کو سنوں گا اور اگر سچ یہی تو معلوم اور جھوٹی ادا کر دوں گا جس سے ہوئی جو ہے اپنے کام سے نکال دیں اللہ کے راستے میں یہاں حضرت صلی اللہ علیہ وسلم سے ملاقات ہوگی آپ نے اسلام کی تبلیغ کی اور وہ بڑا متاثر ہوا اسلام قبول کر لیا ہوا دیکھیں بالکل اسی طرح ختم نبوت فورم والے اور یہ جو بال دوستی اور گالیاں دے رہے ہیں ان کی طرف جا رہے ہیں قادیانیوں کے بارے میں ناجائز قرآن سے بات نہ کیا کرو ہم سے بھی نہ جاؤ کم از کم یہ تو ثابت ہو گیا کہ آپ کو فارغ کر کے باتوں پر ان کے عقیدے پر ان کی سنت پر قائم ہے لیکن ہم جو ہے وہ حضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت پر قائم ہیں کہ ہمارا کام جو ہے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت کا احیاء کرنا ہے اور آپ کے دین کو کھلانا ہے تو منع ہے کہ آپ میں سے کوئی تو سحری کی سنت پر عمل کرے گا کیوں کہ آنحضرت صلی وسلم نے فرمایا اصحابی کالنجوم بایہم اقتدیتم اہتدیتم کہ میرے صحابہ ستاروں کی مانند ہے جس کی پیروی کرو گے تم ہدایت پاؤ گے تو کم از کم ایک صحابی کی پیروی کر لیں تو امید ہے کہ آپ شعیب ہدایت پاجائیں گے گے  یہ عبداللہ صاحب جو ہیں نام تو ان کا ہے عبداللہ اللہ کا بندہ لیکن آپ کا کام شیطان کا بند ہونا چاہیے کیونکہ آپ کی زبان ہے یہ شیطان سے بھی بدتر ہے اللہ آپ کو ہدایت دےاچھا اگلا سوال یہ ہے کہ اگر فجر کی نماز میں لیٹ ہو جائے تو ہم فجر کی نماز کب بعد میں پڑھ سکتے ہیں اگر انسان اس وقت اچھا ہے کہ سورج گرہن کرنا یا فجر کی نماز کا وقت ہو گیا ہے ختم ہوگیا ہے اور سورج ہے تو پھر انتظار کر لے جب سورج جو ہے وہ جو ہے وہ ٹوٹ جائے تو پھر اس کے بعد سے لے کر ظہر کی نماز کا ہے امجد کی نماز ادا کرسکتے ہیں اگر رہ گئی ہے لیکن بھارت پر چاہیے ایک دن میں ہے آپ کا پروگرام بتائیں صدیق نے جناب بہت شکریہ آپ کا اور بہت سارے لوگوں نے بھی اس طرح کی کمنٹس کیے ہیں کہ مجھے پروگرام پسند آتا ہے آپ سے درخواست کی ہے کہ اس کو اور لوگوں تک بھی پھیلائیں تاکہ ان کا بھی اس سے فائدہ ہوگا آپ نے ہمارے یوٹیوب چینل کو ابھی تک سبسکرائب نہیں کیا تو گزارش ہے کہ وہ بھی کر لیں اور جس کی شناخت کر لیں تاکہ جب بھی پروگرام آیا کرے آپ کو بھول جاؤ پتہ چل جائے روما صاحب یا صاحبہ کہتے ہیں کہ اللہ آپ کو ہدایت دے ساڈی صرف حضرت محمد صلی اللّٰہ صلی کریں اس کا کیا مطلب ہے ٹھیک ہے جواب ضرور دیں یا میرے بھائی جو بھی آپ ہیں ہم یہ کہتے ہیں کہ حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام کی زندگی کا مطالعہ کریں تاکہ آپ کو پتہ چلے کہ آپ سچے یا جھوٹے اب وہی ہیں جن کے متعلق حضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے کہا تھا کہ آخری زمانے میں آئیں گے آپ ہی وہ ہیں جن کے متعلق حضرت علی نے فرمایا تھا کہ مسیح موعود اور مہدی کی رات میں خبر لائے تو اس کو میرا سلام پہنچانا اور اس کی بیعت کرنا خواب میں برف کے پہاڑوں پر بھی کرنا پڑے تو جب تک کسی چیز کے بارے میں تحقیق نہیں کریں گے اس وقت ہوتا ہے جب صلی اللہ علیہ وسلم کے متعلق تو آپ کا بھی کیا ہے میرا بھی کہا تھا کہ آپ کو ہر اک سزا بھی ہے لیکن کیا اس کے بعد آپ کی سیرت یا آپ کے بعد آپ کے صحابہ کی سیرت یا اولیاء کی کوئی سیرت کی کتابیں لکھی گئیں اور کیا آپ نے کبھی اور کوئی کتاب نہیں پڑھی اور رسول کی سیرت کے علاوہ تو کبھی عقل سے بھی کام لیا کریں حاضر سلم نے فرمایا کہ ایک محدود علم و حکمت کی باتیں جو ہے وہ مومن کی گمشدہ میراث ہے تو اگر آپ تحقیق کی غرض سے مرزا صاحب کی شہادت کے متعلق جو ہے وہ کتابیں پڑھتے ہیں جس سے آپ پر ان کی حقیقت بیان کی صداقت کی آواز ہو جائے تو اس میں حرج ہی کیا ہے ہمارا یہ مطلب نہیں کہ آپ ان حضرت آدم کے متعلق نہ پڑھ کے متعلق میں پڑے لیکن موت کے متعلق بھی پڑے گا کہ آپ وہی ہیں جن کا نبی صلی وسلم نے وعدہ دیا ہے اس لیے کبھی عقل بھی استعمال کر لیا کہ نہیں بس جذباتی باتیں نہ کیا کریں کریں کریں پہلے ایک آیا تھا کہ فوج کے لئے قرآن خوانی کا ثواب قرآن خوانی کا ثواب تو ایسا ممکن نہیں ہے کہ میں ملتا ہے کیونکہ کسی کی قرآن خوانی نہیں کیا آپ سے کوئی فائدہ نہیں ہے اگر دعا کیجئے اس کے نام پر صدقہ خیرات کیا جائے تو وہ اس کو فائدہ دے گا قرآن پڑھنے سے کوئی فائدہ نہیں ہوگااچھا شاہ خواجہ صاحب کو ایک نظم سے موت کے پاس ایسا کیا ہے جس سے پتہ چلتا ہے کہ وہ فارسی خاندان سے تھے آپ کے باوجود ان سے ہجرت کر کے آئے تھے اس کے لیے کسی چیز کے ہونے سے کیا فرق پڑتا ہے اگر آپ نے پہلا پروگرام نہیں دیکھا آپ ماشاء اللہ رانا ملتی ہیں لیکن آپ کا نام کیا تھا جس کا ٹائیٹل جیتا تھا اگر تم مرزا غلام احمد قادیانی کا خاندانی پس منظر اور ہماری پولیس میں جائیں تو آپ کو وہاں سے یہ معلومات مل جائیں گی تب آپ کے خاندان نے فارسی جیت کر کے ہندوستان میں رہائش اختیار کی اس پروگرام کو دیکھ لیں پھر کوئی سوال ہو تو ضرور کو ٹھیک ہے جی آج تو منٹ ہوگئے ہیں جن میں سے 40 منٹ پروگرام کا دورانیہ ہوتا ہے تو آپ سب کا بہت شکریہ جو کہ آج کے لائیو پروگرام میں ہمارے ساتھ شامل ہوئے ہیں بہت سارے سوالات رہ گئے ہیں لیکن جو کے اتنا ہی شوق ہے تو آجاؤ سوال تو نہیں لے سکیں گے تو آپ لوگوں سے درخواست ہے کہ آج آپ کا سوال نہیں آیا تو کل کے پروگرام میں عجیب پروگرام مفتی میں چھ دن پیش کرتے ہیں کبھی کبھار ایسا ہو جاتا ہے کہ کسی طرح پروگرام نہیں کرتے کسی اور مصروفیت کی وجہ سے لیکن عمومی طور پر جو ہے یہ ہفتے میں 6کلو گرام آتا ہے جو میکدے پروگرام نہیں آتا اس کے علاوہ باقی ہر روز آج کا پروگرام تقریبا ساڑھے گیارہ بجے اس ٹائم کے مطابق کر رہا ہے طبعی پروگرام کے شروع میں آپ آئے نہیں جو ختم نبوت فورم والے ہیں اور دوسرے اب بالکل ان کی ہمیشہ کی عادت ہے کہ بالکل آخر میں جاتے ہیں اور جب آخر میں ان کے سوالات سب سوالوں کے جواب نہیں آتے پھر کہتے ہیں کہ ہمارے سوالوں کے جوابات نہیں دیے گئے ہیں بھائی اگر آپ پہلے اتنے کشی کرتے ہیں کہ پہلے سوالات غیر احمدیوں کے لئے اور بعد میں جو ہے آپ دوستوں کے سوالات کیے جائیں تو اگر پہلے آیا کریں ساڑے گیارہ کے قریب جو ہے تو پھر زیادہ چانس ہے اس بات سے کہ آپ کا سوال آ جائے گا اگر آج نہیں آیا تو کل پوچھنے کبھی نہ آئے تو پوچھ لیتے میں اسی دن بھیجا ہے آپ سوالات نہیں سکتے ہیں اس کے علاوہ آپ ہمیں ای میل کے ذریعے بھی ہم سے رابطہ کر سکتے ہیں میل ایڈریس ہے اردو اسلام آباد لوک سوا لات کا میں 80 میل کے ذریعے بھیجتے ہیں تو ان کو حمل کے ذریعہ جواب دیتے ہیں تو آپ جیسے وہ ایسا کر سکتے ہیں تو ایک دفعہ پھر آپ سب کا بہت شکریہ اور دوبارہ پروگرام کے شروع میں میں نے بات کی تھی یہ ختم نبوت فورم والے دوسرے کہتے مجھے صاحب کی زندگی انہوں نے فلاں کام کیا تو فلاں کام کیا تو میں اگر آپ آ جاتے تو آپ کی بچپن سے لے کر آؤ کچھ دیر پہلے تک کے واقعات کا ذکر کیا ہے اور آپ کے مخالفین کی تحریرات کا ذکر کیا ہے کہ وہ کیسے انہوں نے بھی اقرار کیا کہ مرزا صاحب خدا تعالیٰ کے ایک سچے مامور ہیں اور آپ کی زندگی پر کسی قسم کا کوئی تعلق ثابت نہیں کر سکتے جس نے آپ کو خالق اعصار گناہ زیادہ وہ لوگ تھے لیکن ان میں اور آپ میں یہ فرق ہے کہ میں شرافت ابھی تک پوری دیانت داری تھی کہ وہ سچ بات کا اظہار کرتے تھے آپ نے مولوی کے زیر سایہ رہ کر اپنے شعور بھی ختم ہوگئی ہے ناداری بھی ختم ہوگیا سچائی کو پرکھنے کی روح بھی جو ہے وہ ختم ہوگئی ہے اگر مولوی سے اپنا پیچھا نہیں چھوڑ آئیں گے تو مزید جو ہے وہ ظلمت اور گمراہی کی طرف جاتے جائیں گے اللہ تعالی آپ کو ہدایت دے اسی دعا کے ساتھ ہم آج کا پروگرام کرتے ہیں میرے ساتھ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم پر درود بھیجنے میں شامل ہوجائیں اللھم صلی علیٰ محمد وعلیٰ آل محمد کما صلیت علی ابراھیم وعلی ال ابراھیم انک حمید مجید اللھم بارک علیٰ محمد وعلیٰ آل محمد کمابارکت علیٰ ابراہیم وعلیٰ آل ابراہیم انک حمید مجید سلام علیکم ورحمۃ اللہ

 64 total views,  2 views today

Leave a Reply

%d bloggers like this: