𝐎𝐩𝐩𝐨𝐧𝐞𝐧𝐭𝐬 𝐚𝐫𝐞 𝐬𝐧𝐚𝐤𝐞 𝐚𝐧𝐝 𝐬𝐰𝐢𝐧𝐞? (مخالفین جنگل کے سانپ اور خنزیر ہیں؟)




𝐎𝐩𝐩𝐨𝐧𝐞𝐧𝐭𝐬 𝐚𝐫𝐞 𝐬𝐧𝐚𝐤𝐞 𝐚𝐧𝐝 𝐬𝐰𝐢𝐧𝐞? (مخالفین جنگل کے سانپ اور خنزیر ہیں؟)

May 21, 2021

پھول شیطان الرجیم بسم اللہ رحمان رحیم ناظرین کرام اسلام علیکم ورحمۃ اللہ کتب سیدنا حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام کا ہے کی جانب سے اٹھائے جانے والے اعتراضات کے جواب دے کر میں حاضر ہیں خاکسار عبدالوہاب کے ساتھ نادیہ چوہدری صاحب انشاءاللہ جواب دیں گے حاجی صاحب برہین احمدیہ پر اعتراضات کے جوابات کا سلسلہ جاری ہے مولانا صاحب نے شیر دیکھا ہے جس پر مخالفین جی بشیر کو سیو ہے وہ فرماتے ہیں کہ بن کے رہنے والوں تم ہرگز نہیں ہوں آدمی مہروبہ کوئی خنزیر اور کوئی ہے مال مخالفین کے اعتراضات کرتے ہیں کہ اپنے نا ماننے والوں کو شعر میں روبہ جانی لومڑی خنزیر اور ماریانی سانپ کا ہے بسم اللہ الرحمن الرحیم نحمدہ و نصلی علی رسولہ الکریم وعلی حضرت مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام خدا تعالیٰ کی طرف سے مامور تھے مسیح اور مہدی تھے مقام نبوت پر فائز تھے مقام مسیح پر فائز تھے اور انبیاء کی سنتیں یہ پائی جاتی ہے کہ وہ ماننے والوں کو زبان سے قدرے سخت زبان جس کو کہتے ہیں مجھے کرنے کے لئے نصیحت بیان کرنے کے لیے اور یہ مثالیں ہمیں کرم میں بھی نظر آتی ہیں مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام نے فرمایا کہ بن کے رہنے والوں تم ہرگز بانی جنگل کارواں کوئی تو اس میں از مسیح موعود علیہ السلام نے جو بن کر استعمال کیا اس کو دیکھتے ہیں کہ اس حوالے کے ساتھ اور کس سیاق و سباق کے ساتھ آپ یہ بیان فرماتے چنانچہ اس شعر سے پہلے حضرت مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام اس نظم میں ایک مضمون بیان فرما رہے ہیں اس کے لیے تم منتظر تھے کہ واقعہ جنگ کرتا اور غریب دیتا وہ تو نہیں آیا مگر میں آیا ہوں تاکہ انصار پر جنگ کو موقوف کر کے کی طرف سے میں بناؤں گا لیکن تم آگے سے جواب دیتے ہو وہ نہیں ہے فرماتے ہیں اے خدا یہ جنگل ہے بند کیا ہے آپ فرماتے ہیں اے خدا بیان تبے صفا یہ دنیائے دوں اس میں دنیا کی جنگ لڑ رہی ہے اور اس میں انسان خود ہی خدا ہوں تعلق نہ ہو تو تم کون ہو بے وفا ہوں انسان کہلانے کا مستحق نہیں اور یہ قرآن کریم کیا ہے قرآن کریم میں اللہ تعالی بیان فرماتا ہے کہ وہ لوگ جو رسول کے مخالف ہوتے ہیں کہتے ہیں حاجی محمد صلی اللہ علیہ وسلم اللہ تعالیٰ اس کو اس مقام پر بھیجا ہے وہ اپنی خواہشوں کی پیروی کرتے ہیں تاکہ اللہ فرماتا ہے یہ سورۃ الفرقان کی آیت نمبر 45 ہے ہم سانحہ قصور ہوں میں اس نہ ہویا کر لے تو گمان کرتا ہے کہ ان میں سے اکثر سنتے ہیں ان ھم الاکالانعام بل ھم اضل ہو سکتا ہے وہ نہیں ہے مگر مویشیوں کی طرح جانوروں کی طرح ہیں بلکہ ان سے بھی زیادہ راستے پڑھتے ہو اب یا نبی کو نہ ماننے والوں کی حیثیت قرآن کے قریب تر ہے مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام پر تو ایک الزام لگانا ہے چنانچہ اسلام خدا حافظ و تقوی بیان تجھے صفا قرآن کریم کے ہاتھ میں نہیں فرماتے ہیں صحت کے تاؤ مت بنو رے بنو تم متقی یہ نبی کی شان تعاون سے بچنا اس عذاب سے بچنا ہے اللہ کا تقویٰ اختیار کرو یہ جو ایماں ہے زباں کا کچھ نہیں آتا غالب آپ کا مسلمان ہونا نام کا عاشق ہونا نہیں آتا موسم سرگودھا چیک کرو بچوں کیسی ہوتی ہے کچھ عرصے بعد جانور آپ نے بھول جاتا ہے جیسے اس کو اپنے بچوں کا بچوں کی طرف متوجہ کرتے ہیں کہ تمہیں موت کا ڈر اس کے بچوں کا تو خیال کرو امن کی راہ پر چلوں بند ہو کر فرماتے ہیں چار راہ ہدایت ہے جس کی طرف بلا رہے ہیں فرماتے ہیں کہ بند کے رہنے والو تم او یار وہ کوئی سندری اگر تم اس نقشے میں دیکھو جب قرآن کہتا ہے ملک شاکر بیان کروں گا اس میں یہی حیثیت ہوتی ہے انسان ہو آپ جانوروں سے زیادہ ہوا تھا دعا بھی کرتے ہیں محسن محلہ شیر ہیں ان دنوں کو خود بدل دیا ہے میرے کا درخت ان دنوں کو خود بدلنے میرے قادر خدا ہے یہ نبی کی شان مخالفین ایمان نہیں لاتے ان کی حیثیت بتا کر قبر کے سامنے جو انسان نہ کریں کیسی ہوتی ہے اس لیے دعا کرتے ہیں ہماری طرف آ گئی ہے سے آگے میں بھی اس بات ناممکن نہیں یہ کام تیرے تیرا پیار ہے اب یہ جو بندہ ہے اس کا ذکر قرآن کریم میں تو بتا دینا یہ آپ کی طرح ہیں بلکہ ان سے بھی زیادہ بڑھتے ہوئے اللہ تعالی فرماتا ہے یہ سورۃ المائدہ کی آیت نمبر 162 ہے ایکسٹور باسط الشیطان الرجیم الہ الا بے کما شرمندہ کام صورت عند اللہ کہہ کیا میں تمہیں ان لوگوں کا حال بتاؤ جن کا بدلہ اللہ کے نزدیک وہ شخص سے بھی جسے تم ناپسند کرتے ہو ملا ہوں غازی 12 اور وہ لوگ اور وہ لوگ ہیں جن پر اللہ نے لعنت کی ہے اور جن پر اس نے اپنا غضب نازل کیا وجعل منہم القردۃ والخنازیر وجعلنا منھم ڈیرہ غازی خان پاکستانی بندر اور سور بنائیں وہ عبادات اور اور شیطان کی پرستش ہونے کی ہے خلع کا شرعی مقام نواز الوہابی چٹخانا کے لحاظ سے بات کر رہے ہیں اور سیدھی راہ سے بھٹکے ہوئے ہیں فائزہ جا کام قالو امنا تمہارے پاس آتے ہیں تو کہتے ہیں مان رہا ہے کاروبار کو فروغ مقدر خارج ہوتے ہیں وہ کفر کے ساتھ ہی داخل ہوتے ہیں اسلام میں اور کف آگے تک کے لیے اسلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہر کے ساتھ واللہ اعلم بما یکتمون یہ بند ہے ہے جس میں اس قسم کے لوگ ہیں قرآن کریم میں واضح نشاندہی کرتا ہے کریم نہیں گھبراتا اللہ کا کلام ہے اللہ تعالیٰ کھول کر بیان کرتا ہے آیات بینات میں کر رہا ہوں اور قرآن کریم کے دوسرے الفاظ دیکھیں یہ بات واضح ہوتی ہے کہ اللہ تعالی کے کلام میں اور رویوں کے کلام میں یہ بعض اوقات انسان کو ہدایت کی راہ دکھانے کے لئے تھوڑا سا سختی بھی استعمال کرنی پڑتی ہے قرآن کریم میں سورۃ المائدہ کی آیت پڑھی خنزیر بھی اسی میں ہے عمر گدھے اور مدثر کے اکاؤنٹ میں انفال کی آیت 56 محکموں میں بہرے گونگے اندھے البقرا 19 مہینوں تین النیل کلام 11 ہم از نقطہ چین سرائیکی مشاعرہ بن میں مشغول کلام 20019 روکنے والے محمد ہاتھ سے بننے والے نسیم فاسق اور فاجر اتلان سرکش زنی مولودنامہ اللہ پاک فوج سونگ البر یا سب مخلوق سے بہتر اللہ کا کرم بھی بیان کرتا ہے تاکہ تم ہدایت کی طرف آج ہی وہ لوگ ہوتے ہیں جو بن میں رہنے والی ہے انسانوں کی زبان سمجھ نہیں آتی فون کی زبان میں بتانا پڑتا ہے علیہ الصلاۃ والسلام نے اس سے ہٹ کر کچھ نہیں فرمایا یہ خاطر جمع رکھیں حضرت عیسی کے منتظر ہیں حضرت عیسی میں جو اپنی امت کو اس میں بنی اسرائیل میں ان سے کیا تم بڑے گمراہ ہو مرکز بدکاروں کا جانوروں کا ریاکار فقیہو اور فریسیو جو مفتی اندرا بتانے والوں کی مرضی ہم آپ کو ان دو اے مومنو ہے شیطان احسان کے بچوں بڑے اور زنا کار لوگ اے آفس کے بچوں تم اپنے باپ ابلیس سے ہو اکرم سومری میرے دل کی بات کرتے ہیں جاکر اسلوبی سے کہہ دو کتے اور سور کے موتی مولا 1 سے 7 یہ جو الفاظ ہیں یہ بعض اوقات انبیاء کی زبان سے ادا ہوتے ہیں اور اس کا مقصد آیت نرم الفاظ میں بند کے رہنے والو آپ ہے قرآن کریم اور حضرت عیسی علیہ الصلاۃ والسلام آپ کے سامنے پڑھ لیا آپ صلی اللہ علیہ وسلم کیا فرماتے ہیں حضرت مسیح موعود علیہ الصلوٰۃ والسلام اعتراض آپ کر لیتے ہیں کی تازہ کرنا چاہیے جس کی اگر ان کے حصہ تر از مسیح موعود علیہ الصلاۃ والسلام پر تو پھر رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو کہاں رکھیں گے بلا کیا وہ اعتراض السلام پر نہیں جاتا اگر اس شعر کی وجہ سے اسد عمر کو جلاتے ہیں السلام کو بھی پتہ ہے کہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو بھی چکرا جائیں گے ابھی چلائیں کیوں کہ اس میں بدعت کہہ دیا اللہ تعالی نے تو یہ کے ساتھ بات کرنی چاہیے عتراض کرنا چاہیے جس کی ضد اپنے پیاروں پر نہ پڑتی ہو پڑھ کر ہمارے آقا و مولا مقدس حضرت محمد مصطفی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے بتائی ہے استعمال فرمائی آپ نے فرمایا کون سی عمر تین فضا ہو امت میں ایک وقت گھبراہٹ کا آئیگا فیر الناس والا علمائے حامد اس کی بات نہیں ہے صرف ہمارے اور ہمارے ہو یعنی وہ لوگ جو فارم میں قرآن کریم حدیث اور اس کا علم بھی جانتے ہیں اس کے بعد فائزہ خان کے نعتونہ کنز العمال کی روایت دیکھیں گے کہ وہ بندر اور سور ہے سورہ مائدہ کی آیت میں بھی ذکر اور پھر اس کے بعد آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی جائیں یہ بیان کنزالعمال میں بیان فرمائیں یمسح قوم نما تیمیۃ فی اخر الزمان نے آخری زمانے میں میری قوم مس کر دی جائے گی کرنا تو ان ہندی پہلے علماء کا ذکر تاؤ مت کا ذکر ہے یہ توجہ دلاتے ہیں کہ یہ اس لئے ان کو چھوڑو اب انسان ہوں اور انسان تقوی کے ساتھ دیانتداری کے ساتھ خدا خوفی کے ساتھ بنتا ہے الفاظ ہے فرمایا صحابہ نے عرض کیا یا رسول اللہ وجہ لا الہ الا اللہ محمد رسول اللہ اور وہ گواہی دیتے ہونگے کہ اہل اللہ اور اس بات کی گواہی دیں گے اور معصوم روزہ بھی رکھتے ہیں سالانہ مانسہرہ منافع بولو یا رسول اکرم کا یہ کالا جاتا ہے المعازف والقینات اور دفاعی اشرف موسیقی کے آلات ہیں ہو جاتے ہو موسیقی ہو جائیں گے اور بات کریں گے ہم ہونگے طور پر تو نہیں ہے کرتا ہوں مگر اس کے بعد سے مشروب اس میں دوسری چیزیں بھی آجاتے ہیں اور منہ میں اب دیکھتے ہیں کانوں میں پکڑی جاتی ہیں مشروبات میں کون کون سی چیزیں استعمال کرتے ہیں وفات والا شہر میں ہی والا ہے ایسی شرف میں اور انہیں لاہور میں اللہ کا خوف اسباب ہوں جب وہ صبح اٹھیں گے قدموں سے ہو کر رہا تھا بندر اور سور ہوگئے یہ ان کی صفات ان کی اندرونی جو قلبی کیفیات ہے ان کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے بیان فرمایا ہے تو یہ اعتراض اٹھایا ان باتوں پر بیان فرمائے فرما رہے ہیں متوجہ رہے ہیں کہ سیدھے اللہ کے بندے بولو اور اللہ سے مناظر بھی کرتے ہیں اللہ تعالی ان کو ہدایت دے وہ اتنا جو مسکرا کے شعر پر کرتے ہیں ان روایات پر گھر کے اندر سلم کا حج کر سکتے ہیں ہم نہیں کہتے کہ یہ کر سکتے ہیں خیال رکھنا چاہیے کی طرف سے معمور ہو کر میں آیا ہے خراب نہ کریں وہ مسیحی ہو کر آیا ہے وہ آپ کے علاج کرنے کے لئے اور اس کی اتباع کریں توبہ کریں اور اس پر ایمان لائیں وآخر دعوانا ان الحمد للہ رب العالمین ناظرین کرام آپ نے سنا یہ راز بھی مخالفین بالکل علم و عرفان سے بالکل عاری ہے بلکل خالی اللہ اگلے پروگرام میں اپنے اعتراض کے جواب کے ساتھ آپ کے 

#Islam#Ahmadiyya#TrueIslamCA#Response#Messiah#Mahdi 𝐎𝐑𝐈𝐆𝐈𝐍𝐀𝐋 𝐒𝐂𝐀𝐍𝐍𝐄𝐃 𝐑𝐄𝐅𝐄𝐑𝐄𝐍𝐂𝐄𝐒 𝐋𝐈𝐍𝐊: https://bit.ly/3bL1QR4 𝐕𝐈𝐃𝐎𝐄 𝐇𝐈𝐆𝐇𝐋𝐈𝐆𝐇𝐓𝐒: 1:00 𝑨𝒄𝒕𝒖𝒂𝒍 𝑸𝒖𝒆𝒔𝒕𝒊𝒐𝒏: 𝑴𝒊𝒓𝒛𝒂 𝑺𝒂𝒉𝒊𝒃 (𝒂𝒔) 𝒉𝒂𝒔 𝒄𝒂𝒍𝒍𝒆𝒅 𝒉𝒊𝒔 𝒐𝒑𝒑𝒐𝒏𝒆𝒏𝒕𝒔 𝒔𝒏𝒂𝒌𝒆𝒔, 𝒔𝒘𝒊𝒏𝒆 𝒂𝒏𝒅 𝒇𝒐𝒙 1:30 𝑨𝒏𝒔𝒘𝒆𝒓: 𝑰𝒔 𝒊𝒕 𝒐𝒏𝒍𝒚 𝑴𝒊𝒓𝒛𝒂 𝑺𝒂𝒉𝒊𝒃 (𝒂𝒔) 𝒐𝒓 𝑮𝒐𝒅 𝑯𝒊𝒎𝒔𝒆𝒍𝒇 𝒂𝒏𝒅 𝑯𝒊𝒔 𝑷𝒓𝒐𝒑𝒉𝒆𝒕𝒔 (𝒂𝒔) 𝒉𝒂𝒗𝒆 𝒅𝒐𝒏𝒆 𝒕𝒉𝒂𝒕 𝒊𝒏 𝒕𝒉𝒆 𝒑𝒂𝒔𝒕? 2:05 𝑨𝒏𝒔𝒘𝒆𝒓: 𝑫𝒐𝒏’𝒕 𝒋𝒖𝒔𝒕 𝒇𝒐𝒄𝒖𝒔 𝒐𝒏 𝒕𝒉𝒆 𝒘𝒐𝒓𝒅𝒔 𝒐𝒇 𝒕𝒉𝒊𝒔 𝒗𝒆𝒓𝒔𝒆; 𝒃𝒖𝒕 𝒄𝒉𝒆𝒄𝒌 𝒕𝒉𝒆 𝒄𝒐𝒖𝒑𝒍𝒆𝒕𝒔 𝒂𝒃𝒐𝒗𝒆 𝒂𝒏𝒅 𝒃𝒆𝒍𝒐𝒘, 𝒕𝒉𝒆 𝒓𝒆𝒇𝒆𝒓𝒆𝒏𝒄𝒆 𝒕𝒐 𝒕𝒉𝒆 𝒄𝒐𝒏𝒕𝒆𝒙𝒕 𝒊𝒕𝒔𝒆𝒍𝒇 𝒂𝒏𝒔𝒘𝒆𝒓𝒔 𝒕𝒉𝒊𝒔 𝒃𝒂𝒔𝒆𝒍𝒆𝒔𝒔 𝒂𝒍𝒍𝒆𝒈𝒂𝒕𝒊𝒐𝒏 3:30 𝑸𝒖𝒓𝒂𝒏𝒊𝒄 𝒗𝒆𝒓𝒔𝒆 𝒅𝒆𝒄𝒍𝒂𝒓𝒊𝒏𝒈 𝒕𝒉𝒆 𝒑𝒆𝒐𝒑𝒍𝒆 𝒆𝒗𝒆𝒏 𝒎𝒐𝒄𝒌𝒆𝒅 𝒐𝒖𝒓 𝒉𝒐𝒍𝒚 𝒎𝒂𝒔𝒕𝒆𝒓 𝑴𝒖𝒉𝒂𝒎𝒎𝒂𝒅 (ﷺ) 4:00 𝑨𝒏𝒔𝒘𝒆𝒓: 𝑨𝒍𝒍𝒂𝒉 𝒕𝒉𝒆 𝑬𝒙𝒂𝒍𝒕𝒆𝒅 𝒅𝒆𝒄𝒍𝒂𝒓𝒊𝒏𝒈 𝒔𝒖𝒄𝒉 𝒑𝒆𝒐𝒑𝒍𝒆 𝒂𝒔 𝒂𝒏𝒊𝒎𝒂𝒍 𝒓𝒂𝒕𝒉𝒆𝒓 𝒘𝒐𝒓𝒔𝒆 𝒕𝒉𝒂𝒏 𝒂𝒏𝒊𝒎𝒂𝒍𝒔 6:35 𝑨𝒏𝒔𝒘𝒆𝒓: 𝑨𝒍𝒍𝒂𝒉 𝒕𝒉𝒆 𝑬𝒙𝒂𝒍𝒕𝒆𝒅 𝒕𝒖𝒓𝒏𝒊𝒏𝒈 𝒑𝒆𝒐𝒑𝒍𝒆 𝒊𝒏 𝒕𝒐 𝒎𝒐𝒏𝒌𝒆𝒚𝒔 𝒂𝒏𝒅 𝒔𝒘𝒊𝒏𝒆 (𝒕𝒉𝒊𝒔 𝒗𝒆𝒓𝒔𝒆 𝒓𝒆𝒇𝒆𝒓𝒔 𝒕𝒐 𝒕𝒉𝒆 𝒏𝒂𝒕𝒖𝒓𝒆 𝒐𝒇 𝒑𝒆𝒐𝒑𝒍𝒆) 𝒂𝒔 𝒕𝒉𝒆 𝒔𝒂𝒎𝒆 𝒗𝒆𝒓𝒔𝒆 𝒔𝒕𝒂𝒕𝒆𝒔 𝒕𝒉𝒂𝒕 𝑻𝒉𝒆𝒚 𝒂𝒓𝒆 𝒕𝒉𝒐𝒔𝒆 𝒘𝒉𝒐𝒎 𝑨𝒍𝒍𝒂𝒉 𝒉𝒂𝒔 𝒄𝒖𝒓𝒔𝒆𝒅 𝒂𝒏𝒅 𝒐𝒏 𝒘𝒉𝒐𝒎 𝑯𝒊𝒔 𝒘𝒓𝒂𝒕𝒉 𝒉𝒂𝒔 𝒇𝒂𝒍𝒍𝒆𝒏 𝒂𝒏𝒅 𝒐𝒇 𝒘𝒉𝒐𝒎 𝑯𝒆 𝒉𝒂𝒔 𝒎𝒂𝒅𝒆 𝒂𝒑𝒆𝒔 𝒂𝒏𝒅 𝒔𝒘𝒊𝒏𝒆 𝒂𝒏𝒅 𝒘𝒉𝒐 𝒘𝒐𝒓𝒔𝒉𝒊𝒑 𝒕𝒉𝒆 𝑬𝒗𝒊𝒍 𝑶𝒏𝒆. 𝑻𝒉𝒆𝒔𝒆 𝒊𝒏𝒅𝒆𝒆𝒅 𝒂𝒓𝒆 𝒊𝒏 𝒂 𝒘𝒐𝒓𝒔𝒆 𝒑𝒍𝒊𝒈𝒉𝒕, 𝒂𝒏𝒅 𝒇𝒂𝒓𝒕𝒉𝒆𝒓 𝒂𝒔𝒕𝒓𝒂𝒚 𝒇𝒓𝒐𝒎 𝒕𝒉𝒆 𝒓𝒊𝒈𝒉𝒕 𝒑𝒂𝒕𝒉.[5:61] 8:05 𝑸𝒖𝒓𝒂𝒏𝒊𝒄 𝒘𝒐𝒓𝒅𝒔 𝒖𝒔𝒆𝒅 𝒇𝒐𝒓 𝒐𝒑𝒑𝒐𝒏𝒆𝒕𝒔 𝒆.𝒈. 𝑴𝒐𝒏𝒌𝒆𝒚, 𝑺𝒘𝒊𝒏𝒆, 𝑫𝒐𝒏𝒌𝒆𝒚, 𝑫𝒐𝒈, 𝑩𝒍𝒍𝒊𝒏𝒅, 𝑫𝒆𝒂𝒇, 𝑴𝒖𝒕𝒆 𝒆𝒕𝒄. 𝑪𝒉𝒆𝒄𝒌 𝒕𝒉𝒆 𝑹𝒆𝒇𝒆𝒓𝒆𝒏𝒄𝒆 𝑳𝒊𝒏𝒌 𝒂𝒃𝒐𝒗𝒆 𝒇𝒐𝒓 𝒄𝒐𝒎𝒑𝒍𝒆𝒕𝒆 𝒍𝒊𝒔𝒕 9:35 𝑱𝒆𝒔𝒖𝒔 𝑪𝒉𝒓𝒊𝒔𝒕 𝒖𝒔𝒊𝒏𝒈 𝒔𝒖𝒄𝒉 𝒘𝒐𝒓𝒅𝒔….. 11:40 𝑶𝒖𝒓 𝒃𝒆𝒍𝒐𝒗𝒆𝒅 𝑯𝒐𝒍𝒚 𝑷𝒓𝒐𝒑𝒉𝒆𝒕 𝑴𝒖𝒉𝒂𝒎𝒎𝒂𝒅 (ﷺ) 𝒖𝒔𝒆𝒅 𝒕𝒉𝒆 𝒔𝒂𝒎𝒆 𝒘𝒐𝒓𝒅𝒔 𝑴𝒐𝒏𝒌𝒆𝒚 𝒂𝒏𝒅 𝑺𝒘𝒊𝒏𝒆 12:20 𝑾𝒉𝒂𝒕 𝒕𝒉𝒆 𝑯𝒐𝒍𝒚 𝑷𝒓𝒐𝒑𝒉𝒆𝒕 𝑴𝒖𝒉𝒂𝒎𝒎𝒂𝒅 (ﷺ) 𝒔𝒂𝒊𝒅 𝒂𝒃𝒐𝒖𝒕 𝒕𝒉𝒆 𝑴𝒖𝒔𝒍𝒊𝒎𝒔 𝒐𝒇 𝒕𝒉𝒆 𝒍𝒂𝒕𝒆𝒓 𝒅𝒂𝒚? 𝐎𝐑𝐈𝐆𝐈𝐍𝐀𝐋 𝐒𝐂𝐀𝐍𝐍𝐄𝐃 𝐑𝐄𝐅𝐄𝐑𝐄𝐍𝐂𝐄𝐒 𝐋𝐈𝐍𝐊: https://bit.ly/3bL1QR4 www.TrueIslam.ca Twitter/Facebook/Instagram: TrueIslamCASHOW LESS

 71 total views,  2 views today

Leave a Reply

%d bloggers like this: